بند کریں
شاعری شرافت عباسدریا میں موج، موج میں دھارا ہی اور ہے

(237) ووٹ وصول ہوئے