بند کریں
شاعری شرافت عباسدل گرفتہ ہوں کہ سرشار مجھے سوچنے دو

(231) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان