بند کریں
شاعری شارق جمال خانہمیشہ اس قفس میں ہی رہوں کیا

(55) ووٹ وصول ہوئے