بند کریں
شاعری صوفی تبسموصل فردوس چشم و گوش سہی

(330) ووٹ وصول ہوئے