بند کریں
شاعری تنویر سپراغموں کی دھوپ میں برگد کی چھاوں جیسی ہے

(274) ووٹ وصول ہوئے