بند کریں
شاعری ولی دکنی

جسے عشق کاتیر کاری لگے

-

jisse ishq ka teer


(188) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان