بند کریں
شاعری ظفر اقبال

ہو بھی سکتا ہے وہ ، لیکن ہو بہو دیکھا نہیں

-

hoo bhi sakta hia wo lakin ho bahu dekha nahi


(314) ووٹ وصول ہوئے