بند کریں
شاعری ظفرترمذی

ہزار بار اگر حشر ہو تو غم کیا ہے

-

hazar bar ager hashar ho tu gham kiya hai


(130) ووٹ وصول ہوئے