بند کریں
شاعری ظفرترمذی

تو اگر جانِ مدعا نہ ہوا

-

tu ager jaan e madda na huat


(509) ووٹ وصول ہوئے