مطلع صاف ہے واشنگٹن
10.3°C
شہر تبدیل کریں | موسم کی پیشن گوئی 🔄
بند کریں
شاعری آپکی شاعریصائمہ نوریندل میں اُتر گئی تیری سیلاب آنکھیں
دل میں اُتر گئی تیری سیلاب آنکھیں
دل میں اُتر گئی تیری سیلاب آنکھیں
محبت کے خواب دکھا گئی تیری سیلاب آنکھیں
خزاں سے پہلے چلی آئی بہار اب بھی
خزاں میں بھی چمکیں تیری گلا ب آنکھیں
یوں دیکھنا کہ اس کو کوئی اور نہ دیکھے
انعام مجھ کو اچھا دے گئیں تیری خواب آنکھیں
آج جس پہ ٹھہرتی ہی نہ تھی نظر ذرا بھی
اتنا معلوم ہے مجھے وہ تھی تیری مہتاب آنکھیں
آنکھیں میری ابھی کھل نہ سکی تھیں
سوال مجھ سے کر گئی تیری بے تاب آنکھیں
ابھی تک تیری ملاقات کا وعدہ نہ کھلا تھا
اعتماد اپنا قائم کر گئی تیری لاجواب آنکھیں
زندگی میں کوئی بھی ایسا موڑ نہیں بچا صائمہ
جو پڑھ نہ سکی ہوں تیری کتاب آنکھیں
صائمہ نورین © جملہ حقوق بحق ادارہ اُردو پوائنٹ محفوظ ہیں۔
© www.UrduPoint.com

دوستوں کے ساتھ شئیر کیجئے