Episode 13 - Awaz E Nafs By Qalab Hussain Warraich

قسط نمبر 13 - آوازِ نفس - قلب حسین وڑائچ

https://photo-cdn.urdupoint.com/show_img_new/books/bookImages/146/400x120/146_logo.gif._2 in Urdu
گروہ صالحین
کوئی تو گروہ ہے جو دنیا کو آباد رکھے ہوئے ہے وہ صبر کرنے والوں کا گروہ ہے کوئی بھی زبان بولتے ہوں … کہیں بھی رہتے ہوں انسانیت کے لئے دُعا کرتے ہیں وہی جن کو زندگی کے معنی اور مفہوم زبانی یاد ہوتے ہیں جن کے اندر فہم و فراست ‘ بصیرت و ادراک زندہ ہے جو سوچ سمجھ کر فیصلہ کرتے ہیں اور خدا کے فیصلوں پر راضی رہتے ہیں جو اپنے ارد گرد بسنے والے لوگوں کی روحوں کا علاج کرتے ہیں جو کمزور اور مجبور زندگی کو بیش بہا قوت مانتے ہیں جو زندگی کے ساتھ انصاف کی تلاش میں رہتے ہیں جو حق کی منزل کو پا کر نہایت خوش ہوتے ہیں جو آواز نفس سنتے ہیں اور دوسروں کو اُس کی حقیقت سے آگاہ کرتے ہیں جن کے سر پر خیالوں کا بھار ہوتا ہے اور فکر کو تقسیم کرتے ہیں جو روحوں کی غذا لذیذہ ہوتی ہے ۔

(جاری ہے)

یہ گروہ شہیدوں کا ہوتا ہے جو مر جاتے ہیں مگر آنے والی نسلوں کے ذہنوں میں زندہ رہتے ہیں یہ صدقہ اور تحفہ سے آگاہ ہوتے ہیں دراصل اہل جمال اور اہل کمال ہوتے ہیں جن کی وجہ سے دنیا میں شادمانی ہے یہ بادشاہی ذہن رکھتے ہیں اور درویشانہ زندگی بسر کرتے ہیں یہ خون جگر سے ذہنوں پر نقش و نگار بناتے ہیں یہ حسن سیرت کے جانشین ہوتے ہیں یہ زندگی کے بعد بھی زندگی میں رہتے ہیں یہ گروہ مخلصین ہے صابرین ہے محبیّن ہے یہ گروہ بدی اور بدنمائی کا دشمن ہے۔

جب یہ گروہ نہیں رہے گا تو قیامت آ جائے گی اور جب اِس کی گرفت ڈھیلی پڑ جائے گی تو لوگ فرقہ درفرقہ تقسیم ہو کر کمزور ہو جائیں گے دہشت اور وحشت کی حکمرانی ہو گی خدا کی سرزمین پر خدا کے بندوں کے خون سے آبیاری ہو گی ۔ یہ گروہ نیکیوں کے ذخیرہ میں سے کچھ باقی نہیں رکھتا …!
لوگو ! آپ کو معلوم ہونا چاہئے خدا اپنی صفات میں انسان کو شامل کرتا ہے وہ اِس طرح کہ اپنی صفات میں سے کوئی صفت انسان کو عطا کر دیتا ہے اِس گروہ کے یہ افراد ہوتے ہیں جو دنیا میں امن کی ضمانت بن کر زندگی بسر کرتے ہیں یہ وہ لوگ ہیں جو آواز نفس سنتے ہیں جب وہ دانائی اور حکمت والا پیغام نشر کرتا ہے اور اِس نعمت والی کیفیت کو اپنے اوپر طاری کرتے ہیں …!
لوگو ! خدا جس کو اپنا بندہ قرار دیتا ہے اُس کے ہاتھ کو اپنا ہاتھ ‘ اُس کی آنکھ کو اپنی آنکھ قرار دیتا ہے اُس کو اپنی وجہہ قرار دیتا ہے اپنے ہونے کا ثبوت اُس میں رکھ دیتا ہے درجہ کمال پر پہنچا کر خود گواہ بن جاتا ہے ۔

خدا عجب ہے اِس لئے تو عجیب عجیب معجزہ نمائی دیکھاتا ہے انسانی عقل کی مجال ہے وہاں تک رسائی حاصل کرے … ہاں !البتہ آواز نفس سننے والا کچھ کچھ خدائی رازوں کو محسوس کرتا ہے ۔ 
انسان کی عظمت کا راز اِس میں ہے کہ راضی برضا رہے اور فطرت سے علم ‘ حکمت دانائی حاصل کرے یہ انسانی نفس کی آواز شیریں ہے ۔
###
آخری تمنا
زندہ رہنے کی تمنا ہر ایک کے دل میں شدت سے ہے مگر مرنے کی تمنا میں بھی ایک مقدس جذبہ ہوتا ہے جب اُس نے کہا میں مرنا چاہتی ہوں مگر تمہارے ہاتھوں میں … اُس نے … جب آخری ہچکی لی اور خون جگر میری ہتھیلی پر آیا تو اُس نے کہا شکر ہے اے خدایا میری تمنا پوری ہو گئی … جب… میں نے اُسے اپنے ہاتھوں سے لحد میں اتار تو اُس نے آہستہ سے سرگوشی کے لہجہ میں مجھے کہا ”تمہیں تو مجھ سے کوئی گلہ نہیں میں نے تمہاری بات کو حتمی سمجھا اگر مجھ سے کوئی غلطی سرزد ہوئی بھی ہے تو مجھے معاف کر دو “ میری لحد پر مٹی آہستہ ڈالنا اور الٹے ہاتھ سے مٹی ڈال کر مجھے الوداع مت کہنا مجھے یہاں چھوڑ کر جا رہے ہو مجھے دل سے مت نکالنا مجھے یادوں میں بسائے رکھنا اور کبھی کبھی مجھے ملنے ضرور آنا مانیہ اور دینہ کو ساتھ ضرور لانا ورنہ مجھے اُن کی اداسی کھا جائے گی جو ‘ جو مجھ سے ناراض ہیں میری طرف سے معافی طلب کرنا اور جن جن نے میرے ساتھ زیادتی کی ہے میں نے انہیں معاف کر دیا ہے … !
ایک بات کہوں خود اگر نہ آ سکو تو گلاب کا ایک پودا میری قبر کے پہلو میں لگا دینا تا کہ تمہاری یاد مجھے نہ ستائے زندگی کے خوبصورت لمحات میں نے تمہارے ساتھ گزارے ہیں میرے تلخ لہجوں کو معاف کر دینا مجھے میرے طرز اختیار کی معافی دے دو … میری تمنا ہے تم خوش رہو زندگی ناراض ہو گئی ہے مگر تم ناراض مت ہونا صرف میری یہی تمنا ہے ۔

 

Chapters / Baab of Awaz E Nafs By Qalab Hussain Warraich

قسط نمبر 1

قسط نمبر 2

قسط نمبر 3

قسط نمبر 4

قسط نمبر 5

قسط نمبر 6

قسط نمبر 7

قسط نمبر 8

قسط نمبر 9

قسط نمبر 10

قسط نمبر 11

قسط نمبر 12

قسط نمبر 13

قسط نمبر 14

قسط نمبر 15

قسط نمبر 16

قسط نمبر 17

قسط نمبر 18

قسط نمبر 19

قسط نمبر 20

قسط نمبر 21

قسط نمبر 22

قسط نمبر 23

قسط نمبر 24

قسط نمبر 25

قسط نمبر 26

قسط نمبر 27

قسط نمبر 28

قسط نمبر 29

قسط نمبر 30

قسط نمبر 31

قسط نمبر 32

قسط نمبر 33

قسط نمبر 34

قسط نمبر 35

قسط نمبر 36

قسط نمبر 37

قسط نمبر 38

آخری قسط