Episode 36 - Awaz E Nafs By Qalab Hussain Warraich

قسط نمبر 36 - آوازِ نفس - قلب حسین وڑائچ

https://photo-cdn.urdupoint.com/show_img_new/books/bookImages/146/400x120/146_logo.gif._2 in Urdu
کم نگاہ لوگ خوبصورت زندگی کے دریچوں میں ہی کیوں نہ بیٹھے ہوں مزہ نہیں لے سکتے … جب تک انسانی نفس زندگی کے سفر کا مبصر نہ ہو اُسے زندگی کی رعنائیاں نظر نہیں آتیں ۔
###
جو منظر دیکھ کر غلط اندازہ لگاتے ہیں وہ کیا جانیں پس منظر کیسا ہو گا … ! پس منظر دراصل حقیقت ہوتی ہے مگر اکثر لوگ سطحی نظر سے زندگی گزار دیتے ہیں … نوشتہ دیوار سب پڑھ لیتے ہیں پس دیوار کیا ہے کوئی نہیں جانتا…!
###
فریب میں نرمی یا نرمی میں فریب دراصل مکار آدمی کا فن ہوتا ہے ایسا شخص فریب نفسی کا شکار ہوتا ہے ۔

###
کارکن کی موت تحریک کی زندگی ہے … شہید روح تاریخ ہوتا ہے ۔
###
انعام کے لئے اگر غداری شرط ہے تو پھر سیاستدان ہونا ضروری ہے جھوٹ اتنا صاف ہو کہ سورج اپنی روشنی دیکھ کر شرما جائے ۔

(جاری ہے)

###
موت چل کر سب کے پاس آتی ہے مگر شہید چل کر موت کے پاس جاتا ہے ۔
###
جو بہترین زندگی بسر کرتے ہیں وہ عمر رفتہ کو فراموش نہیں کرتے عمر رفتہ تجربات کی پناہ گاہ ہوتی ہے اور تجربہ زندگی کا نچوڑ … ! گرم جوش اور حساس آدمی تجربہ سے فائدہ اٹھاتا ہے ۔

###
دریا دیوانے ہوتے ہیں جب کبھی اِن پر پاگل پن کا دورہ پڑتا ہے تو اپنی ہی بستیاں اجاڑ دیتے ہیں اور اپنے ہی کناروں پر بسنے والوں کو بہا لے جاتے ہیں ۔ دریاؤں سے دوستی مت رکھو اور دریا دلوں سے پیار کرو … دریا کفایت اور کفالت دونوں کا خیال رکھتے ہیں مگر جب ناراض ہو جائیں تو تباہی پھیلا دیتے ہیں … دریا وطن کی زندگی ہے … دریاؤں کے کنارے بسنے والے لوگ دریاؤں جیسا مزاج رکھتے ہیں ۔

###
زندگی کے آگے ضبط اور ضابطہ کا مضبوط بند ضروری ہے ورنہ اِس کے بہہ جانے کا خطرہ رہے گا دولت اور جوانی زندگی کے لئے انتہائی خطرناک ہیں ۔ انسان کی زندگی میں جب دولت اور جوانی کا خمار آتا ہے تو وہ سنجیدگی اور فہمیدگی کو فراموش کر دیتا ہے اُس کا خوش حال عریاں ہو جاتا ہے اُس کا نفس رنجیدہ ہونا چھوڑ دیتا ہے اسباب و انجام سے بے خبر ہو جاتا ہے ۔

###
یادیں جب خوابوں کی جھیل میں ڈوب جائیں تو انسان آنکھوں کی موجودگی میں منظر نہیں دیکھ سکتا انسان ماضی کی وسیع اور نرم آغوش میں سکون کا متمنی رہتا ہے ۔
###
جب سوچ چھوٹی ہو تو بات بڑی نہیں کرنی چاہئے اور جب سوچ بڑی ہو تو بات چھوٹی نہیں کرنی چاہئے ۔
###
دنیا کی بہترین خوشبو ختنہ ہرن میں اور بہترین لذت ناف زن میں … بہترین مٹھاس لباب مگس شیریں میں ہے ۔

###
جتنا جتنا انسان فطرت سے دور ہوتا جائے گا اُس کی خوشیوں میں اتنی اتنی خوشبو کم ہوتی جائے گی پھر وہ مصنوعی خوشبو اور مصنوعی خوشیوں سے دل بہلائے گا ۔
###
امتحان شامہ نفس شناسی ہے … جب خوشبو اور بدبو میں فرق مٹ جائے تو انسان ‘ انسان نہیں رہتا ۔
###
ابوالبشر جسے عرف عام میں حضرت آدم  کہتے ہیں جس کی اولاد کا نام آدمی ہے جب جنت سے بوجہ رائے زوجہ نکالے گئے تو اُن کی آنکھوں سے جو آنسو ٹپکا وہ کرہ ارض پر سمندر بن کر پھیل گیا ۔

جہاں ابن آدم  نے سب سے پہلے ذریعہ تجارت بنایا اور اُس میں انسان کے لئے خوراک رکھ دی جسے اب لوگ سی فوڈ کہتے ہیں خشکی پہ رہتے ہیں اور بڑے مزے سے اُسے کھاتے ہیں ابن آدم  بھی کمال ہے خود ہی علم ہے اور خود ہی طالب علم … ! پاکبازی کا درس دیتا ہے مگر اندر سے پلیدی نہیں نکالتا … جو ہاتھ بڑھاتا ہے اُس پر بیعت کر لیتا ہے مگر اپنے اندر والے انسان سے ناآشنا ہے جس کے پاس علم حقیقی ہے یہ بشر بھی عجیب ہے کبھی درندہ اور حیوان بن جاتا ہے کبھی زندہ ہوتا ہے اور مردہ ہو جاتا ہے ۔

###
شکر کا جذبہ دراصل روح کی تسلی ہے جو شکر بجا نہیں لاتے اُن کی روح ترسیدہ رہتی ہے الحمد للہ کی صدا خدا کو بہت پسند ہے اور سبحان اللہ خدا کے نزدیک ترین کرتی ہے ۔
###
مٹی پر سجدہ کرو اِس طرح خاک اور خاکی کا رشتہ مضبوط ہوتا ہے اور خدا کے فرشتے اِس رشتہ پر گواہ ہوتے ہیں کہ انسان نے اپنے اصل سے رشتہ قائم کررکھا ہے یہ خود شناسی کی طرف مکمل رجوع کا پیش خیمہ ہے … خدا سے ملاقات کی تمنا مت کرو اور دیکھنے کی آرزو دل میں رکھو گے تو فطرت کے ذرہ ذرہ میں آپ کو نظر آئے گا جدھر نظر اٹھاؤ ادھر نظر آئے گا جس رخ بھی خاک پر سجدہ کرو اُسی کے لئے ہو گا بس تسکین روح کے لئے ہو ۔

###
ایک برُے کے پیچھے دوسرے بڑے برُے کو پشت پناہ کہتے ہیں بڑا چھوٹے کی پشت پناہی کرتا ہے ۔
###
جمع متکلم لہجہ انسان کی عزت میں اضافہ کرتا ہے اور انسان کے اندر احترام والا جذبہ پیدا ہوتا ہے اِس سے گفتگو میں احساس زندہ رہتا ہے ۔
###
جب آنکھوں پر یقین نہ آئے تو دل والا یقین خودبخود ختم ہو جاتا ہے یقین ہی حقیقت کے راز فاش کرتا ہے اور فطرت کا سینہ چاک … موت کو دیکھ کر انسان موت کو یاد نہیں کرتا یہ کتنا بے خود عدم یقین ہے ۔

###
جفاکش اور فاقہ مست نہ ظاہری جنگ ہارتا ہے نہ باطنی یہ مضبوط اور مصمم ارادے سے زندگی بسر کرنے کا زندہ جذبہ رکھتا ہے یہ شکوک بازی سے مرغوب نہیں ہوتا اِسے موسمی اثرات شکست نہیں دے سکتے … یہ سفر اور حضر کا عادی ہوتا ہے یہ بھوک اور پیاس کے سہنے کا حوصلہ رکھتا ہے دراصل یہ جواں ہمت ہوتا ہے یہ برکیف اور خانہ بردوش ہوتا ہے ۔
###
دل ایک وہ وادی ہے جو مشکلات ‘ مصائب اور مسائل زندگی کے درمیان واقعہ ہے اگر اِس وادی میں خوف خدا رہتا ہے تو اِس پر موسمی اثرات بے اثر ہوتے ہیں تو پھر اِس کے ارد گرد سارے پہاڑ اِس کی حفاظت کرتے ہیں … وادی تنگ ہو سکتی ہے مگر بے صورت نہیں ہوتی ۔

###
انسان کے لئے سب سے بڑی علم و ہنر کی جاگیر ہے اِس جاگیر کو قومیایا نہیں جا سکتا مگر اِس سے انسانی ذہن سیراب ضرور کئے جا سکتے ہیں جس سے قوموں کو فائدہ ہوتا ہے اور ملک ترقی کرتے ہیں ۔ جہاں علم و ہنر کی جاگیریں نہیں ہوتیں وہ پسماندہ رہتے ہیں خواہ زمین کھلیں ‘ دولت وافر اور ذہن تنگ رہتے ہیں ۔
###
غیر متعین سفر انسان کو ذہنی اور جسمانی طور پر تھکا دیتا ہے اور اکثریت اِسی سفر کی مسافر ہے منزل کی طرف چل رہا ہے مگر راہ گرد آلودہ ہے مسافر کی آنکھیں ہیں مگر اُس نے خود بند کی ہوئی ہیں شاید وہ زندگی کے سفر کو دیکھنا نہیں چاہتا ۔

###
پرُ خمار خطرہ پسند ہوتا ہے اور پرُ مغز خطرہ بھانپ لیتا ہے ۔
###
دنیا احمقوں کے لئے جنت اور عقل مندوں کے لئے اسرار خانہ … احمق اپنی حماقتوں سے اپنی ہی دنیا برباد کرتے ہیں اور عقل مند اپنی فکر سے اپنی دنیا آباد رکھتا ہے وہ دنیا کو عذاب خانہ اور احمق جنت خانہ قرار دیتا ہے ۔
###
جو اپنے ہی بچھائے ہوئے جال میں پھنس جاتا ہے اُسے کوئی دوسرا نہیں نکالتا … زندگی کی تاریک غار میں جو پھنس جاتے ہیں انہیں باہر نکلنے کا راستہ نہیں ملتا … انسان کے بس میں کچھ نہیں مگر سمجھتا ہے سب کچھ اِس کے بس میں ہے اِس وجہ سے جال میں پھنس جاتا ہے اوربے حِسی کی تاریک غار میں دھنس جاتا ہے ۔

###
بے عقل اور بد عقل سے عقل مندی اور عقل پسندی کی باتیں کرنا کھلی حماقت ہے عقل مندی یہ ہے کہ آپ اِن سے زندگی کے کسی معاملہ پر بحث مت کریں ان کے ذہن قفل زدہ اور فکر وو شعور زنگ آلود ہوتا ہے ۔
###
نوالہ اور پیالہ دونوں منہ بند کرتے ہیں جو زیادہ فضول بک بک کرتے ہیں اُن کا یہ علاج ہے … کار بد کرنے والوں کا یہ دونوں علاج ہیں حقیقت زندگی کیا ہے نوالہ اور پیالہ کیا جانیں۔

جو محنت پر یقین رکھتے ہیں وہ خدائی معرفت کی پہچان رکھتے ہیں ۔ کثافتی ماحول میں رہنے والے لوگوں کا لطیف ہوا میں دم گھٹتا ہے … تنہائی روح کے لئے مفید ہے اور لطیف ہوا جسم کے لئے … تنہائی اور لطیف ہوا زندگی کے لئے نہ کہ نوالہ اور صرف پیالہ … نوالہ جسم کے لئے اور پیالہ تنہائی کے لئے ۔

Chapters / Baab of Awaz E Nafs By Qalab Hussain Warraich

قسط نمبر 1

قسط نمبر 2

قسط نمبر 3

قسط نمبر 4

قسط نمبر 5

قسط نمبر 6

قسط نمبر 7

قسط نمبر 8

قسط نمبر 9

قسط نمبر 10

قسط نمبر 11

قسط نمبر 12

قسط نمبر 13

قسط نمبر 14

قسط نمبر 15

قسط نمبر 16

قسط نمبر 17

قسط نمبر 18

قسط نمبر 19

قسط نمبر 20

قسط نمبر 21

قسط نمبر 22

قسط نمبر 23

قسط نمبر 24

قسط نمبر 25

قسط نمبر 26

قسط نمبر 27

قسط نمبر 28

قسط نمبر 29

قسط نمبر 30

قسط نمبر 31

قسط نمبر 32

قسط نمبر 33

قسط نمبر 34

قسط نمبر 35

قسط نمبر 36

قسط نمبر 37

قسط نمبر 38

آخری قسط