Episode 31 - Baatein Canada Ki (aik Pakistani Immigrant Ke Zabani) By Farrukh Saleem

قسط نمبر 31 - باتیں کینیڈا کی (ایک پاکستانی امیگرینٹ کی زبانی) - فرخ سلیم

Baatein Canada Ki (aik Pakistani Immigrant Ke Zabani) in Urdu
 طوطاتوپ چلاتا ہے!
کالج کی پڑھائی مشکل سے مشکل ہوتی جا رہی تھی۔تین کورسز ایک ساتھ شروع ہو گئے تھے ا ور ہر ایک میں مشکل پیش آ رہی تھی۔ میری طرح کئی اور بڈھے طوطیبھی پھنسے ہوئے تھے
 چونکہ کشتیاں جلا چکے تھے، اس لئے کوئی اور چارہ کار نہیں تھا۔ دن کہاں جاتا تھااور رات کہاں؟، کچھ پتہ نہیں چلتا تھا۔

بیسمنٹ کے روشندان کے باہر اور اندر ایک ہی جیسا سماں تھا۔ اللہ تعالیٰ نے محنت اور دعائیں دونوں ہی قبول کر لیں اور طوطے نے پہلا سمسٹر پاس کر لیا، پاس ہی نہیں کیا اچھے گریڈز کے ساتھ پاس کیا۔
دوسرا سمسٹر شروع ہوا تو اس میں ایک کورس تھا
"خود اپنے باس بنیں"
 یہ ایک عملی کورس تھا اوراس کا مرکزی نکتہ ذاتی کاروبار تھا۔

(جاری ہے)

یہ آپ کو بتا رہا تھا کہ آپ اپنااپنا ذاتی کاروبار کیسے شروع کریں، کاروبار کیسے رجسٹر کرائیں، ویب سائٹ ڈیزائین کا بزنس خاکہ کیسے بنایا جائے اکاؤنٹنگ کیسے کریں، ٹیکس کی ادائیگی کیسے ہو؟ وغیرہ وغیرہ۔

اس کورس کے آخر میں شرکاء کو انفرادی طور پرایک تجرباتی کاروباری رپورٹ پیش کرنی تھی اور اسی رپورٹ پر طلبا ء کے فیل یا پاس ہونے کا انحصار تھا۔اس لحاظ سے معاملہ بے حد سنجیدہ تھا ۔
 زیادہ ترطلباء کا خیال تھا کہ کاروبار رجسٹر کرانے میں کوئی ہرج نہیں ہے۔یوں رپورٹ لکھنے میں بھی آسانی ہو جائے گی اور کچھ تجربہ بھی ہاتھ آجائے ۔ ایک دو کا خیال تھا کہ تھوڑی سی ریسرچ کر لی جائے کیونکہ ایسا نہ ہو جلد بازی میں رجسٹریشن کروا لیا جائے اور بعد میں انکم ٹیکس کے مسائیل پیدا ہو جائیں۔

بات مناسب تھی اور اس موضوع کو اگلے ہفتہ تک ملتوی کر دیا گیا۔
اگلے ہفتہ رپورٹ ملی کہ رجسٹریشن کا طریقہ کار بہت آسان ہے اور خرچہ سو ڈالر سے بھی کم ہے۔ انکم ٹیکس میں کافی رعائتیں ہیں۔ آپ اپنے اخراجات مثلاً گاڑی کا خرچہ، ٹیلی فون، کمپیوٹر اور انٹرنیٹ وغیرہ کا کچھ حصہ اپنے بزنس اخراجات سے منہا کر سکتے ہیں۔ بنک میں بزنس اکاوئنٹ کھولنے پر بینک والے بھی اچھی خاصی مراعات دینے ہیں۔

اگر نہ چلے توآپ جب چاہیں کاروبار بند کر سکتے ہیں۔
سب چیزیں مثبت پا کر میں نے کاروبار رجسٹر کرانے کا فیصلہ کر لیا۔اگلے ہفتیکاروبار رجسٹر بھی ہو گیا ، لیکن اب سوال یہ تھا کہکاروبار کروں تو کیا کروں؟ میری تو سات پشتوں میں بھی کسی نے یہ کام نہیں کیا!
میں اس موضوع پر غورو فکر کر ہی رہا تھا کہ ایک دن نوٹس بورڈ پر ایک پارٹ ٹائم سٹوڈینٹ ویب ڈیزائنر کی آسامی نکلی۔

کالج کے ایک پروفیسر کو اپنے کام میں ایک" چھوٹے" کی ضرورت تھی۔ ہفتہ میں تین گھنٹے کاکام تھا اور پیسے بھی کم ہی تھے۔ خیرپیسوں کا تو اتنا مسئلہ نہیں تھا، خدشہ یہ تھا کہ میری کلاس میں ایک سے ایک جغادری پڑے ہیں، اگر وہ اس آسامی کے لئے درخواست دیتے ہیں تو ان میں میری دال کیسے گلے گی، دوسرے میرا تجربہ بھی کچھ زیادہ نہیں ہے۔بعد میں پتہ چلا کہ ان جغادریوں کے پاس اس معمولی کام کے لئے وقت ہی نہیں تھا۔


 میں نے زیادہ سوچ بچار میں وقت ضائع نہیں کیا اور اس آسامی کے لئے درخواست دے دی۔میں اس وقت حیرت زدہ رہ گیا جب دوسرے ہفتہ میرا انٹرویو بھی ہو گیا اور پروفیسر نے مجھے رکھ بھی لیا۔
 کام آسان تھا،پروفیسر صاحب کوان کی اپنی ذاتی ویب سائٹ پر کچھکام کروانا تھا جو وہ خود ذاتی مصروفیت کے باعث کر نہیں پا رہے تھے اور ٹالتے چلے آرہے تھے ۔پرو فیسر صاحب نے پہلی ہی میٹنگ میں مجھے بہت واضح ہدایات دیں کہ کیا کرنا ہے اور کس طرح کرنا ہے۔

ابتداء میں کچھ غلطیاں ضرور ہوئیں،لیکن پھر گاڑی چلنے لگی۔
 ایک دن پروفیسر صاحب کہنے لگے
" تمہیں کام کرتے ہوئے دوہفتے سے زیادہ ہوگئے ہیں۔ میں آج تمہارا چیک بنا دیتا ہوں، کس نام سے بناؤں؟"
"میں نے اپنا ایک ذاتی بزنس حال ہی میں رجسٹر کرایا ہے، کیا اسکے نام چیک بن جائے گا؟" میں نے جھجکتے ہوئے پوچھا
"کیوں نہیں یہ تو زیادہ اچھا ہے"۔

لیجئے اس بہانے اپنے ذاتی بز نس پر بوہنی بھی ہو گئی۔یوں سمجھیں کہ طوطا حادثاتی طور پر توپ چلا بیٹھا
ایک دن میں نے پروفیسر صاحب سے پوچھا "آپ مجھے اپنے فائنل پروجیکٹ کے لئے کوئی آئیڈیا دے سکتے ہیں، میں ابھی تک کچھ بھی طے نہیں کر سکا ہوں ؟"
پروفیسر صاحب نے اپنے مخصوص انداز میں میز پر دو انگلیوں سے کھٹ کھٹ کی،نیم وا آنکھوں سے کچھ دیر تک خلاء میں کچھ گھورتے رہے اور پھر بولے
 "تمہاری کمیونٹی یہاں اچھی خاصی ہے۔

کیوں نہیں تم نئے آنے والوں کی مدد کے لئے اپنی ایک ویب سائٹ بنا ڈالو ۔ یہ تمہاراعملی پروجیکٹ بھی ہو جائے گا اور ایک طرح سے تمہاری صلاحیتوں کا شو کیس بھی "
 مشورہ بہت مناسب تھا۔ میں نے پروفیسر صاحب کی مدد سے میں نے اپنی ویب سائٹ کے لئے ڈومین (Domain)رجسٹر کرا لیا اور ایک تجرباتی کمیونٹی ویب سائٹ کھڑی کرنی شروع کر دی۔ پروفیسر صاحب سے مشورہ کرنے کے بعد میں نے اپنی ویب سائٹ میں کچھ معلومات اردو میں بھی شامل کر دیں۔

ایک اور زبان شامل کرنے سے سائٹ کو ایک نئی جہت مل گئی اور مجھیاس عملی پروجیکٹ میں کچھ زیادہ نمبر ملنے کی امید بھی ہو گئی
پروفیسر صاحب کے ساتھ میرا کام اگلے چند ہفتوں میں ختم ہو گیا ۔چلتے وقت انہوں نے مجھے پیشکش کی کہ اگر مستقبل میں میں کسی نوکری یا کسی بزنس پروجیکٹ کے لئے درخواست دیتا ہو، اور اس میں کسی حوالہ کی ضرور ت ہو تو میں بلا جھجھک ان کا نام استعمال کر سکتا ہوں۔


پروفیسر صاحب کی مختصر رفاقت میرے لئے ایک سرمایہ ثابت ہوئی۔ ایک حساب سے میرے استاد ہی نہیں پہلے کلائنٹ بھی تھے اور انہوں نے میرے کیرئر کی سمت کے تعین میں مدد دی۔
تیسرا اور آخری سمسٹر عملی پروجیکٹ کا تھا۔اس سمسٹر میں ہر ایک کو انفرادی طور پر ایک عملی پروجیکٹ پر کام کرناتھا۔ کچھ لوگ بزنس یا آن لائن مارکٹنگ کی سائٹ بنانے کی فکر میں تھے۔

میں نے اپنی کمیونیٹی ویب سائٹ کو ہیبطور پروجیکٹ پیش کیاجوتھوڑی بہت تبدیلوں کے ساتھ منظور ہو گیا۔
 جیسے جیسے وقت گزر رہا تھا پروگرام ختم ہونے اور فارغ ہونے کی خوشی بھی ہو رہی تھی لیکن اس کے ساتھ ساتھ یہ بھی فکر تھی کہ پتہ نہیں اس کے بعد نوکری کی کیا صورت نکلتی ہے۔ پھر تعلیمی قرضے کا بھی بوجھ ہے، اس کی ادائیگی بھی کرنی ہے۔ دیکھیں کیا ہوتا ہے؟
 دیکھتے دیکھتے ۸ ہفتے گزر گئے کہ یہی اس سمسٹر کی کل مدت تھی۔

پروجیکٹ کی رپورٹ جمع کر ادی ۔ کام اچھا تھا، پاس ہونے میں کوئی مسئلہ نہیں ہوا۔
مجھے کالج چھوڑنے کا افسوس تھا لیکن میں اس لحاظ سے اچھا خاصا خوش قسمت تھا کہ میں نے کینیڈا کے ایک اچھے ادارے میں سال بھر تعلیم حاصل کی۔امیگرینٹ کی زندگی میں عام طور سے ایسے مواقع کم ہی آتے ہیں۔اللہ جسے موقع دے

Chapters / Baab of Baatein Canada Ki (aik Pakistani Immigrant Ke Zabani) By Farrukh Saleem

قسط نمبر 1

قسط نمبر 2

قسط نمبر 3

قسط نمبر 4

قسط نمبر 5

قسط نمبر 6

قسط نمبر 7

قسط نمبر 8

قسط نمبر 9

قسط نمبر 10

قسط نمبر 11

قسط نمبر 12

قسط نمبر 13

قسط نمبر 14

قسط نمبر 15

قسط نمبر 16

قسط نمبر 17

قسط نمبر 18

قسط نمبر 19

قسط نمبر 20

قسط نمبر 21

قسط نمبر 22

قسط نمبر 23

قسط نمبر 24

قسط نمبر 25

قسط نمبر 26

قسط نمبر 27

قسط نمبر 28

قسط نمبر29

قسط نمبر 30

قسط نمبر 31

قسط نمبر 32

قسط نمبر 33

قسط نمبر 34

قسط نمبر 35

قسط نمبر 36

قسط نمبر37

قسط نمبر38

قسط نمبر39

قسط نمبر40

قسط نمبر41

قسط نمبر42

قسط نمبر43

قسط نمبر44

قسط نمبر45

قسط نمبر46

قسط نمبر47

قسط نمبر48

قسط نمبر49

قسط نمبر50

قسط نمبر51

قسط نمبر52

قسط نمبر53

قسط نمبر54

قسط نمبر55

قسط نمبر56

آخری قسط