ڈالر کی قدر اور شرح سود میں اضافہ سے صنعتوں کی پیداواری لاگت بڑھے گی ‘افتخار بشیر

پیداواری لاگت بڑھنے سے مقامی مصنوعات عالمی منڈی میں مقابلہ نہیں کرپائیں گے،برآمدات میں کمی ہوگی

ڈالر کی قدر اور شرح سود میں اضافہ سے صنعتوں کی پیداواری لاگت بڑھے گی ..
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 04 دسمبر2018ء)صدر گرائنڈنگ ملز ایسوسی ایشن پاکستان چوہدری افتخار نے کہا ہے کہ روپے کے مقابلہ میں ڈالر کی قدر مسلسل بڑھنے اورا سٹیٹ بینک کی جانب سے شرح سودمیں ڈیڑھ فیصد اضافہ کے اعلان کے نتیجہ میں مقامی صنعتوں کی پیداواری لاگت بڑھے گی جس کے ممکنہ اثرات برآمدات پر بھی پڑ یں گے کیونکہ پیداواری لاگت بڑھنے سے مقامی مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ سے ملکی مہنگی مصنوعات عالمی منڈی میں دیگر ممالک سے مقابلہ نہیں کر پائیں گی اور ملکی برآمدات اور زرمبادلہ کے ذخائر میں کمی ہوگی ۔

(جاری ہے)

ان خیالات کا اظہار انہوںنے گرائنڈنگ ملز ایسویسی ایشن کے صنعتکاروں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ افتخار بشیر چوہدری نے کہا کہ ڈالر کی قیمت میں اضافہ سے درآمدی خام مال کی لاگت میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے خام مال کی لاگت میں اضافہ کے باعث مقامی صنعتوں کی پیداواری اخراجات بڑھ گئے ہیں جس کے نتیجے میں مقامی مصنوعات عالمی منڈی میںدیگر ہم عصر ممالک کی مصنوعات سے مسابقت نہیں کرپاتیں جبکہ ڈالر کی قیمت بڑھنے سے حکومت قرضوں پر سود ادائیگی میں بھی مشکلات کا شکار ہے اور حکومتی قرضوں میں بھی اضافہ ہوگا ۔اس لیے حکومت ڈالر کی قیمتوں پر کنٹرول کرے اور شرح سود کو سنگل ڈیجٹ پر لائے۔

Your Thoughts and Comments