اسلام آباد ویمن چیمبر کے وفد کا صدر چیمبر رضوانہ آصف کی قیادت میں اسلام آباد چیمبر کا دورہ ،

چیمبر کے صدر احمد حسن مغل، سینئر نائب صدر رافعت فرید اور نائب صدر افتخار انور سیٹھی کے ساتھ باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا

اسلام آباد ویمن چیمبر کے وفد کا صدر چیمبر رضوانہ آصف کی قیادت میں ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 جنوری2019ء) اسلام آباد ویمن چیمبر آف کامرس اینڈ اینڈ سٹری کے ایک وفد نے چیمبر کی صدر رضوانہ آصف کی قیادت میں اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کا دورہ کیا اور چیمبر کے صدر احمد حسن مغل، سینئر نائب صدر رافعت فرید اور نائب صدر افتخار انور سیٹھی کے ساتھ باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا۔

اسلام آباد ویمن چیمبر آف کامرس اینڈ اینڈ سٹری کی سینئر نائب صدر ناصرہ علی، نائب صدر نیلم نایاب اور دیگر وفد میں شامل تھیں۔ وفد سے خطاب کرتے ہوئے اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر احمد حسن مغل نے کہا کہ خواتین ہماری آبادی کا نصف سے زائد ہیںلیکن اپنا کاروبار شروع کرنے میں خواتین کو متعدد مسائل کا سامنا ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ خواتین کو قومی دھارے میں لانے کیلئے سازگار پالیسیاں بنائے جس سے معیشت پائیدار اقتصادی ترقی کی راہ پر گامزن ہوگی اور معاشرے میں خوشحالی آئے گی۔

انہوںنے کہا کہ خواتین انٹرپرینیورز کی بہتر ترقی کیلئے حکومت کاروبار دوستانہ ماحول پیدا کرنے پر خصوصی توجہ دے تا کہ زیادہ سے زیادہ خواتین اپنا کاروبار شروع کرکے ملک کی ترقی میں فعال کردار ادا کر سکیں۔ احمد حسن مغل نے کہا کہ پاکستانی خواتین اعلیٰ صلاحیتوں سے مالا مال ہیں اور کاروبار سمیت زندگی کے ہر شعبہ میں آگے بڑھنے کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہیں تاہم ضرورت اس بات کی ہے کہ حکومت خواتین کی ترقی کی راہ میں حائل تمام رکاوٹوں کو دور کرے اور پالیسی سازی کے ذریعے خواتین کو ترقی کے بہتر مواقع فراہم کرنے پر توجہ دے جس سے معیشت کی ترقی میں خواتین کا کردار بڑھے گا اور غربت و بے روزگاری میں کمی ہو گی۔

انہوںنے کہا کہ پی ٹی آئی کی قیادت نے ہمیشہ خواتین کی ترقی کیلئے آواز اٹھائی ہے، اب وقت آ گیا ہے کہ موجودہ حکومت خواتین کو کو معاشی طور پر مضبوط بنانے کیلئے پالیسی سازی کرے اور ان کی بہتری کیلئے عملی اقدامات اٹھائے۔ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب صدر رافعت فرید اور نائب صدر افتخار انور سیٹھی نے خواتین انٹرپرینیورز کی ترقی کیلئے اسلام آباد ویمن چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی کوششوں کو سراہا۔

انہوں نے کہا کہ حکومت نے ایف بی آر میں پالیسی سازی اور ٹیکس ایڈمنسٹریشن کے شعبوں کو الگ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جوخوش آئند ہے اور اس امید کا اظہار کیا کہ اس سے ٹیکس نظام میں بہتری آئے گی۔ تاہم انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ خواتین انٹرپرینیورز کو جن ٹیکس مسائل کا سامنا ہے حکومت ان کو فوری طور پر حل کرنے کیلئے اقدامات اٹھائے۔ انہوں نے وفد کو یقین دلایا کہ چیمبر خواتین انٹرپرینیورز کے مفادات کے بہتر فروغ کیلئے اسلام آباد ویمن چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرے گا۔

اسلام آباد ویمن چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کی صدر رضوانہ آصف نے اس موقع پر خواتین انٹرپرینیورز کو درپیش مختلف مسائل پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکس اصلاحات کا فقدان کاروباری خواتین کی ترقی کی راہ میں اہم رکاوٹ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایف بی آر کا آڈٹ کا موجودہ نظام خواتین سمیت کاروباری برادری کیلئے مشکلات کا باعث بن رہا ہے لہذا ایف بی آر آڈٹ نظام کو آسان بنانے پر بہتر توجہ دے۔

انہوں نے کہا کہ بوتیک کے کاروبار پر حکومت نے اس وقت دہرا ٹیکس لگایا ہوا ہے کیونکہ خواتین انٹرپرینیورز کو انکم ٹیکس کے علاوہ سیلز ٹیکس بھی دینا پڑتا ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ ایف بی آر اس پر نظرثانی کرے۔ انہوںنے یقین دہانی کرائی کہ اسلام آباد ویمن چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری خواتین انٹرپرینیورز سمیت تاجر برادری کے مفادات کے تحفظ کی کوششوں میں آئی سی سی آئی کے ساتھ بھرپور تعاون کرے گا۔ اس موقع پر دونوں اداروں نے خواتین کی بہتر ترقی کیلئے باہمی تعاون کے مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا۔

Your Thoughts and Comments