4ہزار 100ارب روپے کی ٹیکس کی وصولی کا امکان ہے،شبرزیدی

ٹیکس وصولی کو 5ہزار ارب روپے تک بڑھایا جائے گا، چئیرمین ایف بی آر

4ہزار 100ارب روپے کی ٹیکس کی وصولی کا امکان ہے،شبرزیدی
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین۔15مئی2019ء) چئیرمین فیڈرل بروڈ آف ریونیو شبر زیدی نے کہا ہے کہ رواں مالی سال 4ہزار 100ارب روپے کی ٹیکس کی وصولی کا امکان ہے اور حکومت سے بڑھا کر 5ہزار ارب روپے تک لے جانے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایمنسٹی سکیم آخری ایسی سکیم ہے اس کے بعد کوئی سکیم نہیں لائیں گے اور کالا دھن رکھنے والوں کے خلاف کاروائی کی جائے گی۔

انہوں نے وضاحت کی ہے کہ کسی اور کے نام گھر رکھنا بھی بے نامی جائیداد میں شمار ہوتا ہے اور اس جرم کا ارتقاب کرنے والے کو 5سال قید کی سزا ہو سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اثاثے ڈیکلیریشن ایمنسٹی سے بڑی سکیم ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تنخواہ دار پاکستان کا صرف 5سے6فیصد ٹیکس ادا کرتا ہے جبکہ 300ٹیکس دہندگان پاکستان کا 80فیصد ٹیکس ادا کرتے ہیں۔

(جاری ہے)

شبر زیدی نے کہا کہ بے نامی قانون 2017میں آیا لیکن اس کا اطلاق 2019میں ہوا۔

وفاقی حکومت نے گزشتہ ہفتے شبر زیدی کو فیڈرل بورڈ آف ریونیو کا چئیرمین تعینات کیا تھا ۔واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ دنوں اپنی معاشی ٹیم میں مزید تبدیلی کرتے ہوئے اسٹیٹ بینک کے گورنر طارق باجوہ سے استعفیٰ لیا تھا جبکہ چیئرمین ایف بی آر جہانزیب خان کو بھی عہدے سے ہٹایا گیا تھا۔ حکومت نے آئی ایم ایف کے عہدیدار رضا باقر کو آئندہ تین سال کیلئے اسٹیٹ بینک کا گورنرمقرر کیا اور شبر زیدی کو 2سال کے لیے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کا چئیرمین تعینات کیا ہے۔

Your Thoughts and Comments