بی ٹو بی میٹنگز کا بنیادی مقصد پاکستان اور چین کے درمیان باہمی تجارت اور سرمایہ کاری کو فروغ دینا ہے،سیکرٹری پاک چین جوائنٹ چیمبر

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 25 جون2019ء)پاک چین جوائنٹ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے پنجاب ایگری ایکسپو2019 کے دوران ایگریکلچرل مشینری بنانے والی چینی کمپنیوں اور مقامی کمپنیوں کے درمیان بی ٹو بی میٹنگز کا انعقاد کر کے زرعی آٹو موبائل سیکٹر میں چینی سرمایہ کاری کے نئے مواقع پیدا کئے۔ اس موقع پر شرکاء سے خطاب کر تے ہوئے پاک چین جوائنٹ چیمبر کے سیکرٹری جنرل صلاح الدین حنیف اور چینی کمپنی ایوریسٹ انٹرنیشنل ایکسپو کے چیف ایگزیکٹو آفیسر مسٹر فاوین ین نے بی ٹو بی میٹنگز کے اغراض و مقاصد پر روشنی ڈالی اور بتا یاکہ ان میٹنگز کا بنیادی مقصد پاکستان اور چین کے درمیان باہمی تجارت اور سرمایہ کاری کو فروغ دینا ہے ۔

صلاح الدین حنیف نے بی ٹو بی میٹنگز کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ ایسی میٹنگز سے مقامی سرمایہ کاروں اور چینی سرمایہ کاروں کو براہ راست مشترکہ کاروباری منصوبے شروع کرنے میں مدد ملتی ہے ۔

(جاری ہے)

اس ضمن میںانہوں نے چینی کمپنی ڈائیلاڈا اور شفانگ کی گہری دلچپسی اور گرم جوشی کی تعریف کی جس نے ایگری ایکسپومیں اپنے ٹریکٹر، ٹرک اور تین پہوں والی گاڑیاں بھی پیش کررکھی تھیں۔

انہوں نے کہا کہ ڈائیلاڈا اور شفانگ کے ساتھ مقامی صنعتکاروں کی بی ٹو بی میٹنگز سے متعدد نئے منصوبوں کی بنیاد رکھی گئی ہے۔اس موقع پر شفانگ اینڈ ڈائیلاڈا کے نمائندے نی یو زہائی نے کہا کہ ہم یورپ میں کامیابی سے جاری اپنی جدید ٹیکنالوجی کو پاکستان میں متعارف کرانے کے خواہاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان یورپ سے جس قیمت پر پرانی کنسٹرکشن مشینری درآمد کر رہا ہے چین اسی قیمت پر نئی کنشٹرکشن مشینری پاکستان کو فراہم کر نے کو تیار ہے۔

پاک چین جوائنٹ چیمبر کے ایگزیکٹو ممبر دائود احمد اور فاروق علی خان شیروانی نے اعتراف کیا کہ چین نے ہر شعبہ میں پاکستان کی ہمیشہ کھل کر مدد کی ہے ۔ اقتصادی ، صنعتی اور تجارتی شعبوں میں بھی چین کا تعاون ہمارے لئے بے حد کارگر ثابت ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاک چین جوائنٹ چیمبر کے تحت جاری بی ٹو بی میٹنگز کا سلسلہ چین اور پاکستان کے درمیان نئے منصوبوں کے اجراء کا موجب بن رہا ہے۔متذکرہ بی ٹو بی میٹنگز میں چین کی معروف کمپنی شفانگ اور ڈائیلاڈا کے نمائندوں نے شرکت کی جبکہ مقامی سطح سے پاکستان ایسوسی ایشن آٹو موٹیو پارٹس اینڈ ایکسیسریز مینوفیکچررز(پاپام) گارڈ گروپ، ماسٹر موٹرز کارپوریشن، جعفر برادر، رمتاج انڈسٹریز اور سازگار انجینئرنگ نمائندوں نے شرکت کی۔

Your Thoughts and Comments