15نومبر سے ایک کروڑ25لاکھ خاندانوںکو خوراک پر سبسڈی دینے کا سلسلہ شروع کررہے ہیں‘جمشید اقبال چیمہ

وزیر خزانہ نے عالمی مارکیٹ میں مہنگائی کے تناظر میںبات کی ، گھی کی قیمتوںکا فارمولہ طے کر رہے ہیں‘ معاون خصوصی فوڈ سکیورٹی

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 17 اکتوبر2021ء)وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے فوڈ سکیورٹی جمشید اقبال چیمہ نے کہا ہے کہ ٹیکسز اور ڈیوٹیز میں کمی کر کے گھی ملوںسے قیمت کا فارمولہ طے کر رہے ہیں، گنے کی کرشنگ کے آغاز کے بعدچینی کی قیمت کو 80روپے فی کلو تک لائیں گے ،دعوے سے کہتا ہوں کہ پنجاب میں آٹا 55روپے فی کلو دستیاب ہے ،وزیر اعظم عمران خان نی133کے ضمنی انتخاب کیلئے امیدوار نامزد کر کے جس اعتمادکا اظہارکیا ہے اس پر مشکورہوں او رانشا اللہ ہم اس نشست پر کامیابی حاصل کریں گے۔

ان خیالات کااظہارانہوںنے این ای133سے امیدوار نامزدہونے پر مبارکباد دینے آنے والے پارٹی رہنمائوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ جمشید اقبال چیمہ نے کہا کہ سروے موجود ہیںکہ پوری دنیا میں پیٹرولیم مصنوعات سمیت اشیائے خوردونوش کی قیمتیں بڑھی ہیں جس کے اثرات درآمد کرنے والے تمام ممالک پر پڑے ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ جو اشیاء ہماری مقامی پیداوار ہیں ان کی قیمتوں کو ایک سطح پر رکھا گیا ہے ، پنجاب میں آٹے کی قیمت کو 65سی55روپے لے کر آئے ہیں اور 20کاتھیلا1100میں فروخت ہو رہا ہے ۔

انہوںنے کہا کہ وزیر خزانہ شوکت ترین نے عالمی مارکیٹ میں مہنگائی کے تناظر میںبات کی ہے ، دنیا میں جو بھی ممالک اشیائے خوردونوش درآمد کرتے ہیں وہ مہنگی ہوتی ہیں۔ انہوںنے بتایا کہ حکومت 15نومبر سے ایک کروڑ25لاکھ خاندانوںکو خوراک پر سبسڈی دینے کا سلسلہ شروع کرنے جارہی ہے اور ان گھرانوںکے افراد کی تعداد 8سی9کروڑ بنتی ہے ، حکومت اپر مڈل کلاس اورامیر طبقات کو ہرگزسبسڈی نہیں دے گی ۔

Your Thoughts and Comments