الیکشن کمیشن کو ریفرنس کی سماعت کا اختیار نہیں۔ عمران خان کا موقف

جمعرات جولائی 12:50

اسلام آباد (اردوپوانئٹ اخبار تازہ ترین26 جولائی2007) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے ایم کیو ایم اور وفاقی وزیر برائے پارلیمانی امور ڈاکٹر شیر افگن نیازی کی طرف سے دائر نا اہلی کے ریفرنس میں الیکشن کمیشن میں جواب داخل کراتے ہوئے موٴقف اختیار کیا ہے کہ الیکشن کمیشن کو ریفرنس کی سماعت کا اختیار نہیں ہے ۔ جس کے بعد چیف الیکشن کمشنر جسٹس ( ر ) قاضی محمد فاروق کی سربراہی میں قائم تین رکنی ٹربیونل نے سماعت یکم اگست تک ملتوی کر دی ہے ۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان کے روبرو ایم کیو ایم کی طرف سے ڈاکٹر فاروق ستار ، وفاقی وزیر مواصلات محمد شمیم صدیقی ، وفاقی وزیر پارلیمانی امور ڈاکٹر شیر افگن نیازی ، ارکان اسمبلی سید صفوان اللہ ، حیدر عباس رضوی ، ڈاکٹر اسرار العبا د ، بیرسٹر حبیب الرحمن اور عمران خان کی طرف سے سینئر ایڈووکیٹ حامد خان ، اویس احمد ، سیف اللہ خان نیازی ، عامر کیانی اور دیگر راہنما پیش ہوئے ۔

(جاری ہے)

عمران خان نے اپنے تحریری جواب دعویٰ میں موٴقف اختیار کیا ہے کہ ان کے خلاف ریفرنس بدنیتی پر مبنی ہے ۔ کیونکہ انہوں نے بارہ مئی کو چیف جسٹس آف پاکستان کی کراچی آمد کے موقع پر ہونیو الے قتل وغارت گری کے خلاف آواز اٹھائی اور ایم کیو ایم کو دہشت گرد تنظیم قرار دلوانے کیلئے لندن میں قانونی چارہ جوئی کرنے کا اعلان کیا ۔ عمران خان نے کہا کہ سپیکر قومی اسمبلی نے بھی ریفرنس کا جائزہ لیے بغیر الیکشن کمیشن کو بھیج دیا ۔

انہوں نے موٴقف اختیار کیا کہ الیکشن کمیشن کو ریفرنس کی سماعت کا اختیار نہیں ہے ۔ جبکہ ڈاکٹر فاروق ستار اور بیرسٹر حبیب الرحمان نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے ریفرنس کا جواب نہ دے کر الزامات کو تسلیم کر لیا ہے ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ روزانہ کی بنیاد پر سماعت کی جائے ۔ تاہم چیف الیکشن کمیشن نے ایشوز فریم کرنے کیلئے سماعت یکم اگست تک ملتوی کر دی ہے ۔