Live Updates

مسئلہ کشمیر کا حل آئیڈیل نہیں ہوگا۔ خورشید قصوری

جمعرات اگست 11:30

لندن (ٍٍاردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین16 اگست 2007) پاکستان کے وزیر خارجہ خورشید محمود قصوری نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کا حل آئیڈیل نہیں ہوگا‘ مسئلہ کشمیر کو کچھ لو اور کچھ دو کی بنیاد پر ہی حل کیا جاسکتا ہے‘ فریقین میں ہٹ دھرمی کا مظاہرہ جاری رہا تو یہ تنازعہ کبھی حل نہیں ہوسکتا‘ پاکستان مسئلہ کشمیر کا وہی حل قبول کرے گا جو کشمیریوں اور پاکستان کے لئے قابل قبول ہو۔

بی بی سی کے ایک پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیر خارجہ قصوری نے کہا کہ فریقین کو کچھ لو اور کچھ دو کی پالیسی پر عمل کرنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ مخصوص حالات کے تحت یہی حل بہترین ہو گا۔ پاکستان، انڈیا یا کشمیر کے لیے یہ کوئی آئیڈیل حل نہیں ہو گا۔ اگر ایسا نہیں ہوتا تو کشمیر کا کوئی حل نہیں نکل سکے گا۔

(جاری ہے)

خورشید قصوری نے کہا کہ مسئلہ کشمیر پر کچھ لو اور کچھ دو کی پالیسی ہونی چاہیے اور اس سلسلے میں دو طرفہ اقدامات اٹھانے ہوں گے اور پاکستان کی جانب سے کسی یکطرفہ پالیسی کا مظاہرہ نہیں کیا جائے گا۔

اگر فریقین ہٹ دھرمی پر قائم رہے تو یہ تنازعہ حل نہیں ہوسکتا۔ واضح رہے کہ بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں حکومت کے خلاف سترہ سال سے مزاحمت کا سلسلہ جاری ہے۔ واضح رہے کہ ساٹھ سال کے دوران کشمیر کے مسئلہ پر انڈیا اور پاکستان کے مابین دو جنگیں لڑی جا چکی ہیں۔بدھ کو بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں علیحدگی پسند گروہوں نے بھارت کے یوم آزادی کے موقع پر ہڑتال کی اپیل کی تھی اور اس دن کو ’یوم سیاہ‘ قرار دیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کی آزادی تک جشن کا تصور بے معنی ہے۔
تنازعہ مقبوضہ کشمیر کی بھڑکتی ہوئی آگ سے متعلق تازہ ترین معلومات