Live Updates

بیرون ملک جانے والے اپنی مرضی سے باہر گئے۔ محمد علی درانی۔۔وطن واپسی پر قانون کے مطابق کارروائی ہو گی‘ پاکستان کی نظر یاتی اساس پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا۔ڈاکٹر قدیر خان کے سلسلے میں پاکستان پر بہت دباؤ تھا جسے برداشت کیا گیا‘خطے میں امن کیلئے ضروری ہے کہ مسئلہ کشمیر کو کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کیاجائے ۔ وفاقی وزیر اطلاعات کی ذرارئع ابلاغ سے گفتگو

اتوار اگست 14:16

لاہور (ٍٍاردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین19 اگست 2007) وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات محمد علی درانی نے کہا ہے کہ بیرون ملک جانے والے اپنی مرضی او رخواہش سے باہر گئے تھے اور اپنی خواہش سے ہی واپس آئیں گے‘ وطن واپسی پر ان کے ساتھ جو بھی ہو گا قانون کے مطابق ہوگا‘ پاکستان کی نظر یاتی اساس پر کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے ‘ خطے میں امن کے لئے ضروری ہے کہ مسئلہ کشمیر کو کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کیا جائے۔

ان خیالات کااظہار انہوں نے گزشتہ روز ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاکہ بیرون ملک جانے والے اپنی مرضی او رخواہش سے باہر گئے تھے اور اپنی خواہش سے ہی واپس آئیں گے‘ وطن واپسی پر ان کے ساتھ جو بھی ہو گا قانون کے مطابق ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی نظریاتی اساس پر کوئی کمپرو مائز نہیں کیا جائے گا ۔

(جاری ہے)

عوام نے سیاست کا حق اسے دیا ہے جو اس کی نظریاتی اور جغرافیائی سرحدوں کی حفاظت کرے گا۔

انہوں نے کہا کہ دنیا میں امن و مساوات کیلئے کسی بیرونی طاقت کی ڈکٹیشن قبول نہیں کی جائے گی۔ محمد علی درانی نے مزید کہا کہ ڈاکٹر قدیر خان کے سلسلے میں پاکستان پر بہت دباؤ تھا جسے برداشت کیا گیا ‘ اس لئے ڈاکٹر قدیر خان اس وقت جس حیثیت میں ہیں وہ ان کے او رپاکستان کیلئے بہتر ہے ۔ وزیر اطلاعات نے کہا کہ خطے میں امن کیلئے ضروری ہے کہ مسئلہ کشمیر کو کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر آئینی ادارے مضبوط ہوں گے تو پاکستان مضبوط ہو گا۔
تنازعہ مقبوضہ کشمیر کی بھڑکتی ہوئی آگ سے متعلق تازہ ترین معلومات