Live Updates

مسئلہ کشمیر کا فوجی حل ممکن نہیں‘ مذاکرات میں کشمیریوں کو شامل کیا جائے۔ عمر عبدالله

بدھ اگست 12:50

سرینگر (ٍٍاردوپوائنٹ اخبار تازہ ترین22 اگست 2007) بھارت کے سابق نائب وزیر خارجہ و نیشنل کانفرنس کے صدر عمر عبدالله نے کہا ہے کہ ان کی جماعت کے پہلی دفعہ پاکستان اور بھارت کے ساتھ اچھے تعلقات بنے ہیں ہم دونوں ممالک میں سے کسی کے ایجنٹ نہیں ہیں۔ گزشتہ روز ایک عوامی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے عمر عبدالله نے کہا کہ ہم نے دونوں ممالک پر کشمیر کے مستقل اور دیرپا حل کیلئے زور دیا ہے انہوں نے کہا کہ مسئلے کا فوجی حل ممکن نہیں ہے مذاکرات میں تمام فریقین کو شامل کرنا چاہئے۔

انہوں نے حکمران اتحادی جماعتوں پر الزام لگایا کہ وہ اپنی حکومت کو مضبوط بنانے کے لئے کشمیری عوام کے احساسات کو پامال کررہے ہیں انہوں نے کہا کہ پی ڈی بی اور کانگریس ایک سکے کے دو رخ ہیں اور اپنے مفاد کی خاطر ریاست میں بے چینی پھیلائی جارہی ہے انہوں نے کہا کہ موجودہ حکمرانوں سے انصاف کی توقع نہیں رکھنی چاہئے انہوں نے کشمیر میں ترقیاتی کاموں کے متعلق کہا کہ حکومت کو مرکز نے پانچ ارب روپے دیئے لیکن پھر بھی عوام بنیادی سہولتوں سے محروم ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ریاست میں بھاری تعداد میں فوج کی موجودگی باعث تشویش ہے فوج وادی کے جوانوں کو پکڑ کر عقوبت خانوں میں منتقل کردیتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل کانفرنس اپنی ذمہ داریوں سے بخوبی واقف ہے اور تمام لوگوں کو یکساں مواقع دینا چاہتی ہے۔
تنازعہ مقبوضہ کشمیر کی بھڑکتی ہوئی آگ سے متعلق تازہ ترین معلومات