صدرمشرف منگل کو سعودی عرب جائیں گے، شاہ عبداللہ سے اہم بات چیت ہوگی،نوازشریف کی وطن واپسی کا معاملہ بھی زیر غور آسکتا ہے، نوازشریف الیکشن کیلئے وطن واپس نہ آسکے تو شہباز اور کلثوم نواز کے واپسی کے امکانات زیادہ ہیں، ذرائع

اتوار نومبر 23:18

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔18نومبر۔2007ء) صدرمملکت جنرل پرویز مشرف سعودی عرب کے اہم دورے پر منگل کو روانہ ہو جائیں گے وہ اس دورے میں سعودی فرمانروا شاہ عبداللہ اور دیگر سعودی حکام کے ساتھ عالمی و علاقائی صورتحال، دوطرفہ تعلقات اور دیگر امورپر اہم بات چیت کرینگے۔صدرمملکت دو دن تک سعودی عرب میں قیام کرینگے اور وہ عمرہ بھی ادا کرینگے مسجد نبوی میں روضہ رسول پر بھی حاضری دینگے تاہم بعض سفارتی سیاسی ذرائع کا کہنا ہے کہ صدرمملکت جنرل پرویز مشرف سے سعودی شاہ عبداللہ کی ملاقات میں سابق وزیراعظم نوازشریف کی وطن واپسی کا معاملہ بھی زیر باعث آئے گا اور اس حوالے سے آئندہ ہفتے اہم فیصلہ متوقع ہے ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ صدر جنرل پرویز مشرف اور نوازشریف کے درمیان براہ راست کوئی رابطہ نہیں ہو گا تاہم سعودی حکام کے ذریعے بلواسطہ رابطے متوقع ہیں اور الیکشن سے قبل نوازشریف کی وطن واپسی کے امکانات بتائے گئے ہیں تاہم اس حوالے سے ابھی صورتحال مکمل طور پر واضح نہیں ہوئی ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی عرب نے نوازشریف کو سعودی عرب سے جانے کی اجازت دیدی ہے اب نوازشریف پاکستان کے سیاسی حالات کے مطابق سعودی عرب سے روانگی کا فیصلہ خود کرینگے ۔

(جاری ہے)

ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ اگر نوازشریف الیکشن سے پہلے واپس نہ آسکے تو مسلم لیگ(ن) کے صدر سابق وزیراعلی پنجاب میاں شہبازشریف اور نوازشریف کی اہلیہ بیگم کلثوم نواز مسلم لیگ (ن) کی انتخابی مہم چلانے کیلئے الیکشن کیلئے پاکستان میں آئیں گے اور اس سلسلے میں 10ستمبرکو نوازشریف کی وطن واپسی کے وقت جو صورتحال پیدا ہوئی تھی اب ایسی صورتحال نہیں ہو گی۔