سابق حکمران لیگ کے دن گنے جاچکے ہیں ،پنجاب کے اہم اضلاع میں ان کے پاس امیدوار موجود نہیں ۔نواز لیگ

ہفتہ جنوری 16:30

پشاور(اردوپوائنٹ اخبا ر تازہ ترین 12. جنوری2008 ) پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی میڈیا کو آرڈینیٹراور صوبائی فنانس سیکرٹری شیر اعظم خان نے کہا ہے کہ مسلم لیگ(ق) کا گراف دن بدن گرتا جارہا ہے اور اس وقت ملک بھر میں اس کے 134ٹکٹ ہولڈرز نے الیکشن کمشن میں نشانات تبدیل کرنے کی درخواستیں جمع کرادی ہیں تاھم الیکشن کمشن نے اس مسترد کرکے پارٹی بننے کے چکروں میں ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور پریس کلب میں اخباری کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا اس موقع پر صوبائی سیکرٹری اطلاعات حاجی ارشد قریشی ،ضلع کر کے کے نا ظم رحمت سلام خٹک اور آفس سیکرٹری جہانزیب خٹک بھی موجودتھے شیر اعظم خان نے کہا کہ موجودہ آمر اور اس کے حواریوں کی غلط پالیسیوں اور اقتدار کی ہوس نے وطن عزیز کو سنگین بحرانوں اور خطرات میں دھکیل دیا ہے انہوں نے کہا کہ قبائلی علاقوں سے شروع ہونیوالا آگ اور خون کا سلسلہ ملک کے بڑے شہروں تک پھیل گیا ہے اور روزانہ بیگناہ معصوم شہریوں کی لاشیں گر رہی ہیں اسی طرح کسی کی جان وامال محفوظ نہیں ہے پورے ملک میں نجی اور سرکاری املاک تباہ ہو رہی ہیں اور خارجی سطح پر پاکستان کے ایٹمی پروگرام اور اس کے وجود کے دن گنے جا رہے ہیں انہوں نے کہا کہ سیاسی یتیموں کے اقتدار پر قابض ہونے ،ملکی وسائل لوٹنے اور ذاتی مفادات کی خاطر آمریت کو کندھا فراہم کیا گیاانہوں نے کہا کہ ملک میں حقیقی قیادت محترمہ بے نظیر بھٹو شہید اور میاں نواز شریف کی واپسی اور عوامی پذیرائی نے چوہدری برادران کیلئے خطرے کی گھنٹیاں بجا دی تھیں جس پر انھوں نے دونوں کیخلاف سازشیں شروع کر دیں انہوں نے کہا کہ بے نظیر بھٹو کے بعد اس وقت صرف میاں نواز شریف ہی وفاق کو بچانے کیلئے آج آخری امید ہیں قوم 18فروری کو ملک پر چینی ،گھی اور آٹے کی قلت مسلط کرنے والوں اور بجلی و گیس کی ناروا لوڈ شیڈنگ کرنیوالوں کا ایسامحاسبہ کریگی کہ آئندہ کوئی سیاسی یتیم قوم کو بھوکا رکھنے اور ملک کو تاریکیوں میں ڈبونے کی جرات نہیں کر سکے گا۔

(جاری ہے)

ان کاکہنا تھا کہ خیبر سے کراچی تک معصوم پاکستانیوں کے بہنے والے خون کے ہر قطرے ،چینی اور گندم کے ہر دانے کا حساب لیا جائیگا ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ملک بھر سے مسلم لیگ (ق)کے امیدوار پارٹی چھوڑ رہے ہیں اور 134امیدوار وں نے الیکشن کمیشن میں انتخابی نشان کی تبدیلی کی درخواستیں دی ہوئی ہیں تاہم الیکشن کمیشن پارٹی بن کر ان کی درخواستوں پر کاروائی نہیں کر رہا انہوں نے الزام لگایا کہ الیکشن کمیشن مسلم لیگ (ق) کا ہیڈ کوارٹر بن کر گیا ہے انہوں نے کہا کہ سابق حکمران لیگ کے پاس اس وقت اٹک،چکوال،راجن پور،ڈیر ہ غازی خان سمیت متعدد حلقوں سے امیدوار موجود نہیں ہیں انہوں نے انکشاف کیا کہ مسلم لیگ (ق) کے امیدوارپارٹی چھوڑ کر مختلف سیاسی جماعتوں بشمول مسلم لیگ (ن) سے رابطے کر رہے ہیں ۔

متعلقہ عنوان :