چیف جسٹس نے کراچی میں بااثر افراد کے ہاتھوں قتل کئے گئے ڈی ایس پی کے بیٹے شاہ زیب کے قتل کا از خود نوٹس لیتے ہوئے آئی جی پولیس اور ایڈووکیٹ جنرل سندھ کو 4جنوری کو طلب کرلیا

منگل جنوری 14:57

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ آئی این پی۔ 1جنوری2013ء) سپریم کورٹ کے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے کراچی میں بااثر افراد کے ہاتھوں قتل کئے گئے ڈی ایس پی کے بیٹے شاہ زیب کے اپنی بہن کی شادی کے روز قتل کا از خود نوٹس لیتے ہوئے آئی جی پولیس اور ایڈووکیٹ جنرل سندھ کو 4جنوری کو طلب کرلیا ۔

(جاری ہے)

تفصیلات کے مطابق کراچی پولیس کے ڈی ایس پی کے جواں سال بیٹے جو یونیورسٹی میں زیر تعلیم تھا کو اندرون سندھ سے تعلق رکھنے والے بااثر وڈیروں کے بیٹوں نے اس کی بہن کی شادی کے روز گولیاں مار کر قتل کردیاتھا ۔

پولیس نے بااثر خاندان کے چشم و چراغ ملزمان کو گرفتار کرنے میں غفلت اور لاپرواہی کا مظاہرہ کیا جس کی وجہ سے مبینہ طور پر ملزمان بیرون ملک فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے‘ شاہ زیب کے قتل پر کراچی میں عوامی اور سیاسی حلقوں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے ملزمان کی گرفتاری کیلئے احتجاجی ریلیاں بھی نکالی تھیں ۔ چیف جسٹس نے قتل کا از خود نوٹس لیتے ہوئے آئی جی اور ایڈووکیٹ جنرل سندھ کو 4جنوری کو طلب کرلیا ۔