بھارتی افواج نے مقبوضہ کشمیر میں درندگی کی انتہا کردی ‘آئے روز حریت قائدین کی گرفتاریاں‘ خواتین کی عصمت دری ‘ جعلی مقابلوں میں قتل جیسی بزدلانہ حرکات کی مذمت کرتے ہیں‘بھارت کی نام نہاد جمہوریت کا پردہ میڈیکل کی طالبہ امانت سے بس میں سنگین ظلم و زیادتی عصمت دری اور قتل سے چاک ہوچکا ہے ‘اقوام متحدہ کشمیر میں اسی نوعیت کے سنگین واقعات کا بھی نوٹس لے ، آزادکشمیر اسمبلی کی ڈپٹی سپیکر شاہین کوثر ڈار کی صحافیوں سے بات چیت

منگل جنوری 16:46

راولپنڈی (اُردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین۔ آئی این پی۔ 1جنوری2013ء) آزادکشمیر اسمبلی کی ڈپٹی سپیکر شاہین کوثر ڈار نے کہا ہے کہ بھارتی افواج نے مقبوضہ کشمیر میں درندگی کی انتہا کردی ہے ،آئے روز حریت کانفرنس کے قائدین کی گرفتاری خواتین کی عصمت دری نوجوانوں کا جعلی مقابلوں میں قتل عوام انتہائی بزدلانہ حرکات ہیں جن کی مذمت کرتے ہیں،،بھارت کی نام نہاد جمہوریت کا پردہ میڈیکل کی طالبہ امانت سے بس میں سنگین ظلم و زیادتی عصمت دری اور قتل سے چاک ہوچکا ہے ،،اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل مسٹر بانکی مون نے اس واقعہ کی مذمت کی ہے ،انہیں چاہیے کہ وہ کشمیر میں اسی نوعیت کے سنگین واقعات کا بھی نوٹس لیں جہاں 8لاکھ بھارتی فوجی تاریخ کے بدترین مظالم ڈھانے میں مصروف ہیں۔

وہ یہاں منگل کو صحافیوں سے بات چیت کررہی تھیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہاکہ مظالم انتہا کو پہنچ چکے ہیں ۔ظلم پھر ظلم ہے جب اس کی انتہا ہوجاتی ہے تو مٹ جاتا ہے ۔مظالم کا سلسلہ زیادہ دیر تک جاری نہیں رہے گا۔آزادی کی جدجہد جاری رہے گی افغانستان سے غیر ملکی افواج کی واپسی جلد شروع ہوگی ۔ڈپٹی سپیکر نے کہا ک حریت کانفرنس کے نمائندے وفد کا دورہ احسن قدم ہے کشمیریوں کو منزل ضرور ملے گی لیکن بھارتی حربے ناقابل اصلاح ہوتے جارہے ہیں ۔

مذاکرات بھی جاری ہیں اور مظالم کا سلسلہ بھی ۔انہوں نے کہا کہ تمام کشمیری آزادی کے نقطہ پر منظم سوچ رکھتے ہیں ۔ پاکستان اور بھارت کو چاہیے کہ آنے والے دنوں میں ہونے والے پاک بھارت مذاکرات میں کشمیریوں کی نمائندگی کو شامل رکھا جائے تاکہ مسئلہ کشمیر کا پائیدار حل نکل سکے ۔