لاہور ہائیکورٹ نے حافظ سعید اور حافظ عبدالرحمن مکی کے سر کی قیمت مقرر،

کرنے کیخلاف دائر درخواست پر وفاقی وزارت خارجہ سے جواب طلب کر لیا

منگل دسمبر 18:38

لاہور( اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 23 دسمبر 2014ء) لاہور ہائیکورٹ نے امریکہ کی جانب سے امیر جماعت الدعوہ حافظ سعید اور مرکزی رہنما حافظ عبدالرحمن مکی کے سر کی قیمت مقرر کرنے کے خلاف دائر درخواست پر وفاقی وزارت خارجہ کو جواب داخل کرنے کا آخری موقع دیتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔۔لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس مسعود عابد نقوی نے کیس کی سماعت کی۔۔حافظ سعید کے وکیل احمد عبداللہ نے موقف اختیار کیا کہ امریکہ نے بغیر کسی قانونی جواز کے حافظ سعید اور انکے ساتھی حافظ عبدالرحمن مکی کے سر کی قیمت تیرہ ملین ڈالر مقرر کر رکھی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے عدالت کو آگاہ کیا کہ حافظ سعید اور انکی جماعت دہشت گردی کی کسی کاروائی میں ملوث نہیں اور نہ ہی امریکہ نے اس حوالے سے کوئی ثبوت فراہم کئے مگر اسکے باوجود دونوں مذہبی رہنماوں اور پاکستانیوں کے سر کی قیمت مقرر کر دی گئی جو کہ پاکستانیوں کے خلاف امریکہ کی یکطرفہ کاروائی ہے۔ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت کو آگاہ کیا کہ پاکستانی وزارت خارجہ نے اس حوالے سے امریکی سٹیٹ ڈیپارٹمنٹ سے تفصیلات طلب کر رکھی ہیں لہذا جواب داخل کرنے کے لئے مزید وقت فراہم کیا جائے۔جس پر عدالت نے وفاقی وزارت خارجہ کو جواب داخل کرنے کا آخری موقع دیتے ہوئے کیس کی مزید سماعت چھبیس فروری تک ملتوی کر دی۔