یمن میں اتحادی فوج کے جنگی طیاروں کی بمباری اور زمینی فورسز کے ساتھ لڑائی میں کم سے کم ساٹھ حوثی باغی ہلاک، دسیوں زخمی

اتوار نومبر 15:05

صنعاء(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔8 نومبر۔2015ء) یمن میں اتحادی فوج کے جنگی طیاروں کی بمباری اور زمینی فورسز کے ساتھ لڑائی میں کم سے کم ساٹھ حوثی باغی ہلاک اور دسیوں زخمی ہو گئے ہیں۔عرب میڈیا کے مطابق مقامی ذرائع کا کہنا ہے کہ وسطی یمن کی الضالع گورنری کے دمت شہر میں پرتشدد جھڑپوں میں نو حوثی ہلاک اور 14 زخمی ہوئے ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ الضالع کے مشرقی محاذ میں الاحرم اور القباطہ کی مقامات کی طرف اہم پیش قدمی ہے جہاں باغیوں کے حملوں میں پانچ حکومتی فوجیوں کی ہلاکت کی بھی خبریں سامنے آئی ہیں۔

یمن کے جنوب مغربی شہر تعز میں حکومتی فورسز کے ساتھ لڑائی میں 18 حوثی باغی ہلاک ہوئے ہیں۔ تعز کے مغربی اور مشرقی اطراف میں اتحادی طیاروں کی گولہ باری سے 13 حوثی اور سابق صدر علی عبداللہ صالح کے وفادار جنگجو ہلاک ہو گئے۔

(جاری ہے)

وسطی شہر الجوف میں بمباری سے حوثی لیڈر ابو عشال سمیت تین دیگر جنگجو ہلاک ہوئے۔البیضاء گورنری کے علاقے الثعالب بقیفہ میں دو مقامات پر جب کہ المناسح کے مقام مزاحمت کاروں کے حملوں میں کم سے کم سات حوثی باغی ہلاک اور کئی زخمی ہو گئے۔

شمال مشرقی یمن کی مآرب گورنری میں چھ حوثیوں کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔ حباب صرواح کے مقام پر اتحادی طیاروں کی بمباری کے نتیجے میں باغیوں کے زیراستعمال گاڑیاں، موٹرسائیکلیں اور جنگی مقاصد کے لیے استعمال ہونے والے آلات تباہ کیے گئے۔دارالحکومت صنعاء میں مزاحمت کاروں اور باغیوں کے درمیان تصادم میں تین حوثی ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے۔ ذرائع کے مطابق صنعاء میں شاہراہ تیونس میں جھڑپ اس وقت ہوئی جب حوثیوں کی ایک چیک پوسٹ پر حکومتی فورسز نے قبضہ کرنے کی کوشش کی۔ اس پر دونوں اطراف سے فائرنگ کی گئی۔

متعلقہ عنوان :