قومی اسمبلی کا ہنگامہ خیز اجلاس سپیکر کی زیر صدارت (کل) ہوگا

ایوان سے پی آئی اے سمیت 7 بلوں کی منظور ی کیلئے جوائنٹ سیشن بلانے کی منظوری لی جائے گی حکومت کے اتحادی جماعتوں سے رابطے ، بیرون ممالک موجود حکومتی اراکین اسمبلی اور سنیٹرز کو طلب کرلیا گیا

اتوار مارچ 15:15

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 مارچ۔2016ء) قومی اسمبلی کا ہنگامہ خیز اجلاس سپیکر آیاز صادق کی زیر صدارت (کل)پیر کوپارلیمنٹ ہاؤس میں ہوگا، قومی اسمبلی کا آج سے شروع ہونیوالا اجلاس 2ہفتے تک چلے گا جس میں پی آئی اے سمیت 7زیر التو اء بلوں کی منظور ی کیلئے جوائنٹ سیشن بلانے کی ایوان سے منظوری لی جائے گی، حکومت کی جانب سے پی آئی اے سمیت 7بل منظور کرانے کے لیے اتحادی جماعتوں سے رابطے سمیت بیرون ممالک موجود حکومتی اراکین اسمبلی اور سنیٹرز کو بھی طلب کرلیا گیا ہے اور اتحادی جماعتوں سے رابطے کیلئے وزیراعظم نے 4وزراء پر مشتمل کمیٹی بھی قائم کر دی ہوئی ۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کا ہنگامہ خیز اجلاس (آج)پیر کو سپیکر آیاز صادق کی زیر صدارت سہ پہر 3بجے پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد ہوگا۔

(جاری ہے)

قومی اسمبلی کا اجلاس تقریبا 2ہفتے تک چلے گا۔قومی اسمبلی کے آج سے شروع ہونیوالے اجلاس میں پی آئی اے کی نجکاری بل سمیت حکومت کے 7 بل مشترکہ اجلاس سے منظور کروانے کیلئے دونوں ایوانوں ،ایوان بالا اور ایوان زیریں کا مشترکہ اجلاس بلانے کی منظوری لی جائے گی۔

جوائنٹ سیشن سے پی آئی اے کو لمیٹڈ کمپنی بنانے کا بل 2016 ،غیرت کے نام پر قتل کیخلاف ترمیمی بل 2016 ،اینٹی ریپ ترمیمی بل 2015 ، نجکاری کمیشن دوسرا ترمیمی بل 2015 ،گیس چوری کی روک تھام اور واجبات کی وصول بل 2014 ، سول سرونٹس ترمیمی بل 2014 اور دی ایمیگریشن ترمیمی بل 2014 بل کی منظوری لی جائے گی، حکومت کی جانب سے پی آئی اے سمیت 7بل منظور کرانے کے لیے اتحادی جماعتوں سے رابطے سمیت بیرون ممالک موجود حکومتی اراکین اسمبلی اور سنیٹرز کو بھی طلب کرلیا گیا ہے ،اتحادی جماعتوں سے رابطے کے لیے وزیراعظم نے 4وزراء پر مشتمل کمیٹی جس میں وزیر مملکت پارلیمانی امور شیخ آفتاب ،وزیر موسمیاتی تغیرات زاہدحامد،وزیر دفاعی پیداوار رانا تنویر حسین اور وزیر بین الصوبائی رابطہ ریاض حسین پیرزادہ بنادی ہے ۔

(رڈ)