بھارت پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کو اپنے لیے براہ راست چیلنج سمجھتا ہے،امریکی اخبار

آزادکشمیر میں چینی منصوبوں پر بھارت نے واویلامچارکھاہے،بھارتی اسٹریٹجک منصوبہ سازچینی بحریہ کی طرف سے گوادرمیں بیس قائم کرنے پرپریشان ہیں،چین کے 14پاورپلانٹس پاکستان میں 2برسوں میں بجلی کی پیداوارشروع کردینگے، چینی پاورپلانٹس 10ہزار400میگاواٹ بجلی پیدا کریں گے،پاکستان میں اتنی بڑی غیر ملکی سرمایہ کاری پہلے کبھی نہیں کی گئی،سی پیک پاکستان میں مارکو پولو کے تجارتی روٹ کی طرز کا منصوبہ ہے ،امریکی اخبار ’’لاس اینجلس ٹائمز‘‘ کی رپورٹ

جمعرات مئی 21:39

بھارت پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کو اپنے لیے براہ راست چیلنج سمجھتا ..

نیویارک(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔26 مئی۔2016ء ) ایک امریکی اخبار نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ بھارت پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کو اپنے لیے براہ راست چیلنج سمجھتا ہے اور اس نے آزادکشمیر میں چینی منصوبوں پر واویلامچارکھاہے،بھارتی اسٹریٹجک منصوبہ سازچینی بحریہ کی طرف سے گوادرمیں بیس قائم کرنے پرپریشان ہیں،پاکستان میں اتنی بڑی غیر ملکی سرمایہ کاری پہلے کبھی نہیں کی گئی۔

امریکی اخبار ’’لاس اینجلس ٹائمز‘‘ کی رپورٹ کے مطابق چین کے 14پاورپلانٹس پاکستان میں 2برسوں میں بجلی کی پیداوارشروع کردینگے،چینی پاورپلانٹس 10ہزار400میگاواٹ بجلی پیدا کریں گے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سی پیک کوبھارت براہ راست چیلنج سمجھتاہے، آزادکشمیر میں چینی منصوبوں پر بھارت نے واویلامچارکھاہے۔

(جاری ہے)

امریکی اخبار کے مطابق پاکستان میں اتنی بڑی غیر ملکی سرمایہ کاری پہلے کبھی نہیں کی گئی، بھارتی اسٹریٹجک منصوبہ سازچینی بحریہ کی طرف سے گوادرمیں بیس قائم کرنے پرپریشان ہے ،ریل منصوبے کو چین سے دوستی کی علامت کے طورپرپیش کیاجارہاہے۔

امریکی اخبار کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 1.6ارب روپے کا اورنج لائن منصوبہ بھی چین کے بڑے اوورسیز انفراسٹراکچر منصوبوں میں سے ایک ہے جس میں چینی صدر شی جن پنگ کے سلک روڈ کو جدید بنانے کے وژن کے تحت مالی معاونت کی جارہی ہے ۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ چین کے مغربی اندرونی علاقوں کے ذریعے وسطی ایشیا ،مشرق وسطی اور یورپ تک اقتصادی پائپ لائن کا ایک بامقصد پلان ہے جو مارکو پولو کے تجارتی روٹ کا عکاس ہے یہ پاکستان میں شروع ہوچکا ہے ۔رپورٹ کے مطابق پاکستان تحویل عرصے سے چین کا انتہائی بااعتماد دوست اور اتحادی ہے ۔