حکمرانوں کا یوم الحساب قریب ہے اب یہ ایوانوں میں نہیں جیلوں میں نظر آئیں گے ‘پاناما لیکس کو قصہ پارینہ بنانے کی کوئی حکومتی سازش کامیاب نہیں ہونے دیں گے

امیر جماعت اسلامی سراج الحق کاکوٹ رادھا کشن ،اوکاڑہ،ساہیوال ،چیچہ وطنی ،خانیوال ،ملتان ،بہاولپور،رحیم یار خان سمیت چھوٹے بڑے ریلوے اسٹیشنز پر خطاب،دوسرے مرحلے میں ٹرین مارچ لاہور سے روہڑی کیلئے روانہ

جمعرات مئی 21:43

لاہور/ساہیوال/رحیم یار خان /بہا ولپور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔26 مئی۔2016ء) امیرجماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ قوم کرپشن کے خلاف اٹھ کھڑی ہوئی ہے ، حکمرانوں کا یوم الحساب قریب ہے ،اب یہ اقتدار کے ایوانوں میں نہیں جیلوں کی سلاخوں کے پیچھے نظر آئیں گے ‘وی آئی پی کلاس نے تمام اداروں کو یرغمال بنا رکھا ہے ‘امیروں اور غریبوں کاعلیحدہ علیحدہ پاکستان ہے ‘امیروں کے پاکستان میں ان کا اپنا قانون ہے جبکہ غریبوں کے پاکستان میں تعلیم صحت روز گار کی سہولتیں ہیں نہ کسی کو انصاف ملتا ہے ‘کرپٹ اشرافیہ نے نہ صرف مزدوروں اور کسانوں بلکہ اقلیتوں کے حقوق بھی دبا رکھے ہیں ‘پانامہ لیکس نے حکمرانوں سمیت سب کے چہروں سے نقاب الٹ دیئے ہیں ‘مشترکہ ٹی او آرز کمیٹی جلد اپنا کام مکمل کرے ،بلاوجہ تعطل اور تاخیر ی حربے نہیں چلنے دیں گے‘حمود الرحمن اور ایبٹ آباد جیسا بے اختیار کمیشن قبول نہیں کریں گے۔

(جاری ہے)

وہ جمعرات کو کرپشن فری پاکستان ٹرین مارچ کے دوسرے روز لاہور سے روہڑی کیلئے روانگی سے قبل اسٹیشن پر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کر رہے تھے ۔اس موقع پرنائب امراء اسداﷲ بھٹو،میاں محمد اسلم سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ ،ڈپٹی سیکرٹری جنرل ڈاکٹر فرید احمد پراچہ ،سیکرٹری اطلاعات امیر العظیم اورسابق امیر جماعت اسلامی پنجاب ڈاکٹر سید وسیم اختر،حافظ سلمان بٹ اور سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی پنجاب بلال قدرت بٹ بھی ان کے ہمراہ تھے۔

سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ ہمارے ٹرین مارچ اور کرپشن فری تحریک کا مقصد ایسے پاکستان کی تعمیر ہے جس میں امیر اور غریب کیلئے تعلیم ،صحت اورروز گارکے یکساں مواقع ہوں اور قانون سب کیلئے برابر ہو۔69سال سے پاکستان پر قابض وڈیروں ،جاگیر داروں اور سرمایہ داروں نے تمام اداروں کو یرغمال بنا رکھا ہے۔خود کو آسمانی مخلوق سمجھنے والوں نے اپنے لئے عیش و عشرت کا سامان اکٹھا کیا جبکہ عوام کے منہ سے کھانے کا آخری نوالا بھی چھین لیا ہے۔

کرپشن اور کرپٹ عناصر نے ملک کا حلیہ بگاڑ دیا ہے پاکستان میں وسائل کی کمی نہیں ہے لیکن وسائل کی غیر منصفانہ تقسیم کے باعث غریب غریب تر اور امیر امیر تر ہوتا جا رہا ہے۔ پاکستان سے پیسہ لوٹ کر پانامہ ، لندن، دبئی اور سوئس بنکوں میں منتقل کرنے والوں کو کبھی معاف نہیں کریں گے، ان کے خلاف لندن تک جا نا پڑا ضرور جائیں گے لیکن انہیں قوم کا پیسہ ہڑپ نہیں کرنے دینگے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان میں وڈیرہ شاہی، کرپٹ لوگوں، جواریوں، صنعت کاروں اور امریکی ٹولے کی بادشاہت ہے ان کو ملک سے بھگانے کیلئے کراچی ،پشاور، اسلام آباد، لاہور،، لندن جانا پڑا ضرور جاؤں گا۔ ان کی وجہ سے ہر ادارہ مفلوج ہوگیا ہے اداروں میں انصاف ہے نہ تھانہ وتحصیلوں میں غریب عوام کی سنوائی ہے۔انہوں نے کہا کہ آئے روز کی مہنگائی نے غریب عوام کو بھوکا مرنے پر مجبور کردیا ہے۔

اشیائے خوردو نوش کی قیمتیں آسمانوں سے باتیں کررہی ہیں۔ بجلی کی قیمتوں میں کئی گنا اضافہ ہوچکا ہے۔10سال قبل345 یونٹ بجلی کا بل1475روپے تھا لیکن آج345 یونٹ بجلی کا5ہزار سے زائد ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں غریب آدمی کرپٹ نہیں ہے بلکہ اقتدار اور اختیارات رکھنے والے کرپٹ ہیں۔ کھیتوں میں کام کرنے والے کسانوں اور صنعتوں میں کام کرنے والے مزدوروں کے ہاتھ کچھ نہیں آتا بلکہ سارا مال کرپٹ لوگ ہضم کرجاتے ہیں۔ غریب کچرے میں اپنا رزق تلاش کرنا ہے جبکہ وزیروں کے کتے اور گھوڑے AC میں سوتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی میدان میں نکل چکی ہے اب کرپٹ لوگوں کو کوئی بچا نہیں سکے گا۔