میڈیکل کالجوں میں داخلے کیلئے انٹری ٹیسٹ (کل )ہوگا، سینئر بیوروکریٹس نگرانی کرینگے

56ہزار سے زائد امیدواروں کو رول نمبر جاری کردیے گئے، 13 شہروں میں 27مراکز قائم، 5000سے زائد امتحانی عملہ تعینات ٹیسٹ اڑھائی گھنٹے جاری رہے گا، متوقع بارش پیش نظر امیدوار صبح جلدی پہنچنے کی کوشش کریں، ترجمان یو ایچ ایس

ہفتہ اگست 20:36

لاہور ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔27 اگست ۔2016ء) پنجاب کے تمام سرکاری و نجی میڈیکل کالجوں میں داخلے کیلئے انٹری ٹیسٹ کل ( اتوار ) یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے زیر اہتمام بیک وقت 13شہروں میں قائم27مراکز پر ہوگا۔ اس حوالے سے پنجاب حکومت نے تمام ضروری انتظامات مکمل کرلیے ہیں۔ وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف کی ہدایت پر صوبائی سیکریٹریز، بورڈ آف ریونیو کے ممبرز، ڈویژنل کمشنرز، اور ڈی سی اوز سمیت سینئر بیوروکریٹس انٹری ٹیسٹ کی مانیٹرنگ کا کام سرانجام دیں گے جبکہ سینئر میڈیکل پروفیسرز امتحانی مراکز کے انچارج ہوں گے ۔

یو ایچ ایس کے ترجمان کے مطابق اس سال56ہزار سے زائد امیدواروں کو انٹری ٹیسٹ میں شرکت کیلئے رول نمبرز جاری کردیے گئے ہیں جن میں سے 36ہزار طالبات اور ساڑھے 19ہزار طلبہ شامل ہیں۔

(جاری ہے)

صوبے کے 13شہروں میں 27مراکز قائم کیے گئے ہیں۔جن میں5000سے زائد نگران عملہ امتحانی فرائض سر انجام دے گا۔ ان شہروں میں لاہور، فیصل آباد، ساہیوال، بہاولپور، ملتان، رحیم یار خان، سرگودھا، راولپنڈی، حسن ابدال، گجرات، گوجرانوالہ، ڈیرہ غازی خان اور سیالکوٹ شامل ہیں۔

بعض شہروں میں متوقع بارش کے پیش نظر یو ایچ ایس نے امیدواروں کو ہدایت کی ہے کہ وہ صبح جلدی اپنے اپنے مقرر کردہ سینٹرز پر پہنچ جائیں اور بارش سے بچنے کیلئے اپنے ساتھ چھتریاں اور برساتیاں بھی لے کر آئیں۔ انٹری ٹیسٹ کا سوالیہ پرچہ کل220معروضی سوالات پر مشتمل ہوگا جس میں کمیسٹری کے 58سوالات، فزکس کے 44سوالات ، انگریزی 30سوالات جبکہ بیالوجی کے 88سوالات ہوں گے۔

پرچہ حل کرنے کیلئے امیدوارو کو اڑھائی گھنٹے کا وقت دیا جائے گا۔ اس کے بعد تمام امیدواروں کو رجحان اور فیڈ بیک سے متعلقہ سوالات کے جواب دینے ہوں گے جن کے کوئی نمبر نہیں ہوں گے ۔اس کیلئے مزید آدھے گھنٹے کا وقت دیا جائے گا۔یو ایچ ایس کی طرف سے جاری کردہ ہدایت کے مطابق ٹیسٹ ٹھیک صبح9بجے شروع ہوگا تاہم تمام امیدوارں کا صبح 8بجے تک اپنے اپنے امتحانی مرکز پہنچنا ضروری ہے کیونکہ سوا آٹھ بجے تمام مراکز سیل کردیے جائیں گے اور اس کے بعد کسی کو اندر داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائیگی۔

لاہور میں انٹری ٹیسٹ کے لیے 7مراکز قائم کیے گئے ہیں۔ جن میں بورڈ آف انٹر میڈیٹ اینڈ سکینڈری ایجوکیشن کے امتحانی مراکز بمقام لارنس روڈ، پنجاب یونیورسٹی ایگزامینیشن ہالز وحدت روڈ ، گورنمنٹ کمپری ہینسووگرلز ہائی سکول وحدت روڈ ، لاہور کالج فار ویمن یونیورسٹی جیل روڈ، یونیورسٹی آف ایجوکیشن ٹاؤن شپ، گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج فار ویمن سمن آباد لاہور اور گورنمنٹ سینٹرل ماڈل سکول لوئر مال کے مراکز شامل ہیں۔

لاہور سے تقریباً ساڑھے 16ہزار امیدوار انٹری ٹیسٹ میں شرکت کررہے ہیں۔پنجاب کے17سرکاری میڈیکل کالجوں میں ایم بی بی ایس کی 3405جبکہ3سرکاری ڈینٹل کالجوں میں بی ڈی ایس کی 216نشستیں ہیں۔ اس کے علاوہ صوبے کے 27پرائیوٹ میڈیکل کالجوں میں ایم بی بی ایس کی تقریباً 3500جبکہ12پرائیوٹ ڈینٹل کالجوں میں بی ڈی ایس کی 800نشستیں ہیں۔ حکومت پنجاب نے انٹری ٹیسٹ کیلئے سخت حفاظتی انتظامات کیے ہیں۔

ان انتظامات کیلئے ڈسٹرکٹ کوآرڈینیشن آفیسرز کو فوکل پرسن نامزد کیا گیا ہے۔ تمام مراکزپر واک تھرو گیٹ اور موبائل جامرز نصب کیے جارہے ہیں۔ٹیسٹ والے دن تمام مراکز پر دفعہ144نافذ کی جائے گی۔ ساتھ آنے والے والدین اور دیگر عزیز و اقارب کے بیٹھنے کیلئے امتحانی مراکز کے قریب شامیانوں اور کرسیوں کا انتظام کیا گیا ہے۔ اس موقع پر ٹریفک کو رواں دواں رکھنے اور پارکنگ کے بھی خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں۔

پنجاب حکومت نے انٹری ٹیسٹ کے بہترین انتظامات کیلئے صوبے کے تمام متعلقہ کمشنرز اور ڈی سی اوز کو ہدایات جاری کردی ہیں۔ ٹیسٹ والے دن امیدواروں کو اپنے ساتھ صرف نیلا بال پوائنٹ پین اور کلپ بورڈ لانے کی اجازت ہوگی۔ بینک کی مہر شدہ انٹری ٹیسٹ درخواست فارم اور رول نمبرسلپ کے کمپیوٹر پرنٹ آؤٹ کے بغیر کسی امیدوار کو کمرہ امتحان میں داخل نہیں ہونے دیا جائے گا۔

متعلقہ عنوان :