کاشتکار مونڈھی فصل میں تیس فیصد زائد کھاد ڈالیں، محکمہ زراعت

منگل دسمبر 13:54

فیصل آباد۔20 دسمبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 دسمبر2016ء)محکمہ زراعت نے کماد کی مونڈھی فصل کے لیے فصل کی کٹائی جنوری کے آخر سے شروع کرنے کی ہدایت کی ہے اور کہاہے کہ کاشتکار محکمانہ ہدایات کے مطابق بروقت برداشت شروع کرکے مارچ تک مکمل کرلیں کیونکہ اس وقت رکھی مونڈھی فصل سے شگوفے خوب پھوٹتے ہیں اور پودے اچھا جھاڑ بناتے ہیں جبکہ دسمبر اور جنوری کے دوران رکھی گئی فصل میںسردی کی شدت سے مونڈھوں میں کشیدہ آنکھیں مرجاتی ہیں۔

محکمہ زراعت فیصل آباد کے ترجمان نے بتایاکہ گنے کی فصل کا منافع بخش پہلواس کی مونڈھی فصل کی پیداواری صلاحیت پر منحصر ہے تاہم مونڈھی فصل کے کھیت کے چنائو کے لیے لیرا فصل کا بیماریوں اور کیڑوں کا محفوظ ہونا ضروری ہے مزید برآں گری ہوئی فصل سے آئندہ فصل کے لیے مونڈھی فصل نہ رکھی جائے ۔

(جاری ہے)

انہوں نے کماد کے کاشتکاروں کو ہدایت کی کہ وہ فصل کاٹتے وقت گنا سطح زمین سے آدھا تا ایک انچ گہرا کاٹیں کیونکہ اس سے زیر زمین پڑی آنکھیں زیادہ صحت مند ماحول میں پھوٹتی ہیں اور مونڈھوں میں موجود گڑوئوں کی سنڈیوں کی تلفی میں مدد ملتی ہے۔

انہوںنے کہاکہ کاشتکار مونڈھی فصل کی اچھی پیداوار کے لیے ناغوں کو بروقت پرُ کریںاورناغے پرُ کرنے کے لیے علیحدہ نرسری لگائیں۔انہوںنے کہاکہ مونڈھی فصل کی کھاد کی ضروریات لیرا فصل کی نسبت زیادہ ہوتی ہیںلہٰذا مونڈھی فصل میں سفارش کردہ مقدار سے تیس فیصد زائد کھاد ڈالیں ۔