سی پیک سے مشرق و سطی ، بحرالکاہل کے ممالک کی باہمی تجارت میں 7.5 فیصد کا اضافہ ہوگا

شنگھائی تا گو ادر کے درمیان تجارتی سامان کی ٹرانسپورٹیشن کے دورانیہ میں 82 فیصد کمی سے تجارتی اخراجات کم ہو جائینگے

اتوار جنوری 12:30

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 01 جنوری2017ء) چائنہ پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے کی تکمیل سے شنگھائی تا گو ادر کے درمیان تجارتی سامان کی ٹرانسپورٹیشن کے دورانیہ میں 82 فیصد کمی واقع ہونے سے تجارتی اخراجات کم ہو جائیں گے۔ رپورٹ کے مطابق سال 2020ء تک مشرق وسطی کے ممالک کے تجارتی اخراجات میں بالترتیب 11.5 اور 25.3 فیصد تک کمی واقع ہوگی۔

(جاری ہے)

چائنہ پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے سے نہ صرف وقت کی بچت سے ہو گی بلکہ تجارتی اخراجات بھی کم ہوں گے بلکہ اس سے مشرق و سطی اور بحرالکاہل کے ممالک کی باہمی تجارت میں 7.5 فیصد کا اضافہ بھی ہوگا۔

رپورٹ کے مطابق مذکورہ منصوبہ کسی ایک ملک نہیں بلکہ جنوبی ایشیاکے خطے کی اقتصادی صورتحال بدل دے گا بلکہ اس سے مجموعی عالمی تجارت کے فروغ میں بھی مدد ملے گی۔

متعلقہ عنوان :