انسٹی ٹیوٹ آف نیورو سائنسز کے انتظامی معاملات کی مزید بہتری کیلئے ایم ایس کلیدی کردار ادا کریں، پرنسپل پی جی ایم آئی پروفیسر ڈاکٹر غیاث النبی طیب

جمعرات فروری 21:30

لاہور۔2 فروری(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 فروری2017ء) پرنسپل پی جی ایم آئی پروفیسر ڈاکٹر غیاث النبی طیب نے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف نیورو سائنسز کے انتظامی معاملات مزید بہتر بنانے اور خوش اسلوبی سے چلانے کیلئے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ لاہور جنرل ہسپتال کو احکامات جاری کر دیئے۔ جس کے تحت وہ تینوں شفٹوں میں انتظامی ڈاکٹرز تعینات کرنے کے علاوہ مریضوں کے علاج معالجہ کو یقینی بنانے اور لواحقین کو درپیش مشکلات میں کمی کیلئے ملازمین کی کارکردگی اور حاضری کو مانیٹر کریں گے جبکہ اس ضمن میں وقتا فوقتا سرپرائز چیکنگ کا عمل بھی جاری رکھیں گے ۔

یہ ہدایات انہوں نے گزشتہ سہ پہر پنز (PINS) کے اچانک معائنہ کے موقع پر دیں ۔ ایم ایس ڈاکٹر غلام صابر اور دیگر انتظامی ڈاکٹرز بھی ان کے ہمراہ تھے ۔

(جاری ہے)

پرنسپل پی جی ایم آئی نے اپنے وزٹ کے دوران نرسنگ کاؤنٹر ز پر غیر ضروری کاغذات چسپاں ہو نے کے معاملہ پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہو ئے کہا کہ شفٹوں کے اوقات تبدیل ہوتے وقت اس بات کو فوکس کیا جائے کہ جب تک نئی شفٹ والا عملہ ڈیوٹی نہیں سنبھال لیتا پہلے سے موجود ملازمین چارج نہ چھوڑیں اور ایک مریض کے ساتھ ایک تیمار دارکی پالیسی کو یقینی بنایا جائے ۔

نیز ڈیوٹی پر موجود سٹاف اپنی یونیفارم پر محکمانہ کارڈ آویزاں کریں ۔ پروفیسر غیاث النبی طیب نے ہسپتال کے باہر سروس لین پر تجاوزات اور رکشوں کی بھر مار پر سیکورٹی گارڈز کی سر زنش کرتے ہوئے انہیں متنبہ کیا کہ وہ اپنی ڈیوٹی کے اوقات میں سروس لین کو تجاوزات سے پاک رکھیں جبکہ انہوں نے ایم ایس کو ہدایت کی وہ فوری طور پر ٹریفک پولیس کے حکام سے رابطہ کر کے وارڈنز کی ڈیوٹی کو یقینی بنائیں تاکہ ہسپتال آنے والے مریضوں اور شہریوں کو درپیش مشکلات کا خاتمہ بلا تاخیر ممکن ہو سکے ۔

پروفیسر غیاث النبی طیب نے کہا کہ پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف نیورو سائنسز میں جدید طبی سہولیات اور جدید مشینری کی فراہمی کی وجہ سے نہ صرف اس سے پاکستان بلکہ خطے کے دماغی امراض کے سب سے بڑے ادارے کے طور پر شہرت حاصل ہو گی ۔

متعلقہ عنوان :