مسلم ممالک پرسفری پابندیاں،ٹرمپ نے نئے ایگزیکٹیوآرڈرپردستخط کردیئے

عراق کے شہریوں پر امریکا کا سفر کرنے پر کوئی پابندی نہیں ہوگی ، امریکا کے مستقل رہائشی بھی اس پابندی سے مستثنی ہوں گے، نئے ایگزیکٹو آرڈر کے مطابق شام، ایران، لیبیا، صومالیہ، یمن اور سوڈان سے تعلق رکھنے والے شہریوں کے امریکا میں داخلے پر پابندی برقرار رہے گی اور انہیں امریکی ویزے جاری نہیں کیے جائیں گے،وائٹ ہائوس ایگزیکٹیوآرڈر کے تحت پہلے سے حاصل ویزے کارآمد ہوں گے،امریکی وزیرخارجہ ریکس ٹلرسن کی پریس کانفرنس

پیر مارچ 22:20

واشنگٹن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آئی این پی۔ 06 مارچ2017ء) امریکی صدرڈونلڈٹرمپ نے نئے ایگزیکٹیوآرڈرپردستخط کردیے،سفری پابندی میں 6 ممالک شامل ہیں ، نئی فہرست میں عراق کانام نہیں ہے ۔امریکی میڈیا کے مطابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے نئے صدارتی حکم نامے پر پیر کی صبح دستخط کیے جس کے بعد اسے منظر عام پر لایا گیا۔وائٹ ہائو س کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ نئے صدارتی حکم نامے کے مطابق عراق کے شہریوں پر امریکا کا سفر کرنے پر کوئی پابندی نہیں ہوگی جبکہ امریکا کے مستقل رہائشی بھی اس پابندی سے مستثنی ہوں گے۔

(جاری ہے)

وائٹ ہائو س کا مزید کہنا تھا کہ نئے ایگزیکٹو آرڈر کے مطابق شام، ایران، لیبیا، صومالیہ، یمن اور سوڈان سے تعلق رکھنے والے شہریوں کے امریکا میں داخلے پر پابندی برقرار رہے گی اور انہیں امریکی ویزے جاری نہیں کیے جائیں گے۔امریکی وزیرخارجہ ریکس ٹلرسن نے سیکریٹری ہوم لینڈسیکیورٹی ،اٹارنی جنرل جیف سیشن کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایاکہ سفری پابندی کی نئی فہرست میں عراق کانام نہیں ، امریکی سفری پابندی میں6ممالک شامل ہیں۔امریکی سفری پابندی کی فہرست میں ایران،شام،یمن،سوڈان،صومالیہ،لیبیا شامل ہیں۔ایگزیکٹیوآرڈر کے تحت پہلے سے حاصل ویزے کارآمد ہوں گے۔