عالمی تقاضوں اور ترقی پر گامزن کرنے کے لئے نئے صدارتی پارلیمانی نظام کی ضرورت ہے،مصطفی کمال

جب تک اختیارات نچلی سطح تک منتقل نہیں ہونگے ملک ترقی کی راہ پر گامزن نہیں ہوگا،چیئرمین پی ایس پی کا پارٹی منشور پیش کرنے پر تقریب سے خطاب

پیر اگست 19:22

عالمی تقاضوں اور ترقی پر گامزن کرنے کے لئے نئے صدارتی پارلیمانی نظام ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 اگست2017ء) پاک سر زمین پارٹی کے چیئرمین سیدمصطفیٰ کمال نے کہا ہے کہ پاکستان میں موجودہ پارلیمانی نظام فرسودہ ہو چکا ہے۔ ملک کو عالمی تقاضوں اور ترقی پر گامزن کرنے کے لئے نئے صدارتی پارلیمانی نظام کی ضرورت ہے جب تک اختیارات نچلی سطح تک منتقل نہیں ہوں گے ملک ترقی کی راہ پر گامزن نہیں ہوگا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مقامی ہوٹل میں پارٹی کے 27 نکات پر مبنی منشور کے اعلان پر اظہار خیال کرتے ہوئے کیا ۔

اس موقع پر ان کے ہمراہ انیس قائم خانی، انیس خان ایڈوکیٹ ،وسیم فتاب سمیت دیگر رہنما موجود تھے مصطفی کمال نے کہا کہ اس وقت ملک مسائلستان بن چکا ہے۔ ہر طرف احتجاج کی صدائیں بلند ہیں مگر نہ وفاق اور نہ ہی صوبے کچھ کرنے کو تیار ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ان کی پارٹی کا پیش کردہ منشور دو سالہ کار گردی پر محیط ہے جس کی تیاری میں ہر مکتبہ فکر کی رائے کو مد نظر رکھا گیا ہے اور مشہور دانشور خاور مہدی کی خدمات بھی حاصل کی گئی ہیں۔

مصطفی کمال نے کہا کہ دنیا میں اس وقت تبدیلیاں رونما ہو رہی ہیں ہمیں ان تبدیلیوں کو مدنظر رکھ کر چلنا ہے ۔ہم نے اپنے منشور میں عزت انصاف اور اختیار سب کیلئے یکساں کو بطور خاص سامنے رکھا ہے۔ ہم اپنے کٹھن وقت میں ساتھ دینے والوں کا شکریہ ادا کرتے ہیں اور امید کرتے ہیں ان کی حمایت اور تعاون مستقبل میںبھی جاری رہے گا۔