میری نااہلی کا منصوبہ پہلے سے بنالیا گیا تھا ،ْ

سپریم کورٹ میں جو بھی کرلیتے نااہلی کے منصوبے پر عمل ہونا ہی تھا ،ْ نواز شریف

ہفتہ اگست 14:06

میری نااہلی کا منصوبہ پہلے سے بنالیا گیا تھا ،ْ
گوجرانوالہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 اگست2017ء) سابق وزیراعظم نوازشریف نے کہاہے کہ میری نااہلی کا منصوبہ پہلے سے بنالیا گیا تھا ،ْسپریم کورٹ میں جو بھی کرلیتے نااہلی کے منصوبے پر عمل ہونا ہی تھا ،ْفیصلے کو عالمی عدالت انصاف میں چیلنج کروں تو عالمی عدالت ایک منٹ میں اسے ختم کردیگی۔ ہفتہ کو گوجرانوالہ سے لاہور روانگی سے قبل میاں نوازشریف کی زیرصدارت پارٹی رہنماؤں کا مشاورتی اجلاس ہواجس میں آگے کے سفر کے لائحہ عمل پر بات چیت کی۔

اجلاس میں وزیر دفاع انجینئر خرم دستگیر ‘ وزیر مملکت توانائی عابد شیر علی سمیت دیگر رہنمائوں نے شرکت کی۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے نوازشریف نے کہا کہ ہم سپریم کورٹ میں جو بھی کرلیتے نااہلی کے منصوبے پر عمل ہونا ہی تھا کیونکہ میری نااہلی کا منصوبہ پہلے سے بنالیا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ بیٹے سے تنخواہ نہ لینا جرم، تولینا بھی جرم ہی ٹھہرتا ۔

نجی ٹی وی کے مطابق انہوںنے کہاکہ سپریم کورٹ کے ججز نے ہمارے ساتھ انصاف نہیں کیا ،ْاگر اس فیصلے کو عالمی عدالت انصاف میں چیلنج کروں تو عالمی عدالت ایک منٹ میں اسے ختم کردیگی۔سابق وزیراعظم نے کہاکہ میں عوام کی خدمت کرنا چاہتا تھا لیکن اس سے بھی روک دیا گیا۔۔نوازشریف نے کہا کہ 70 سال سے ووٹ کی قدر نہیں کی گئی لیکن اب وقت آ گیا ہے کہ عوام کو اپنے ووٹ کی قدر کرانی ہے۔

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments