سندھ اسمبلی میں نیب کے خاتمے کیلئے غیر قانونی آرڈیننس کی منظوری کے معاملے پر حکومت سندھ پیچھے ہٹ رہی ہے، الطاف شکور

ہوا کا رخ بدل رہا ہے ،عوام باشعور ہورہے ہیں اور عدالتیں کرپشن کے مجرموں کا احتساب کررہی ہیں، صدر پاسبان پاکستان

پیر ستمبر 21:18

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 ستمبر2017ء) پاسبان پاکستان کے صدر الطاف شکور نے کہا ہے کہ سندھ اسمبلی میں نیب کے خاتمے کیلئے غیر قانونی آرڈیننس کی منظوری کے معاملے پر حکومت سندھ پیچھے ہٹ رہی ہے ،یہ عوام کی پہلی کامیابی ہے ۔ ہوا کا رخ بدل رہا ہے ،عوام باشعور ہورہے ہیں اور عدالتیں کرپشن کے مجرموں کا احتساب کررہی ہیں ۔ بہت جلد نیا سورج طلوع ہوگا ، کرپشن ،لوٹ مار اور وڈیرہ شاہی کا راج ختم ہوگا ۔

جس کے نتیجے میں انشاء اللہ سندھ کے مظلوم عوام کو عزت ،روزگار ،امن و امان نصیب ہوگااور سندھ ہر میدان میں ترقی کی شاہراہ پر گامزن ہوگا ۔ وہ سندھ ہائیکورٹ میں نیب کیس میں عدالتی کاروائی کے بعد صحافیوں سے گفتگو کررہے تھے ۔ اس موقع پر پاسبان کے وکیل عرفان عزیزایڈوکیٹ ،پاسبان کراچی کے جنرل سیکریٹری سردار ذوالفقار ، حاجی عبدالصمد ،سعید اللہ ،طاہر عظیم و دیگر بھی موجود تھے ۔

(جاری ہے)

الطاف شکور نے کہا کہ پاسبان کی آئینی درخواست نمبر D-5347/017 پر آج سندھ ہائیکورٹ کے چیف جسٹس احمد علی ایم شیخ ،جسٹس منیب اختر اور جسٹس کے کے آغا پر مشتمل بنچ سے سرکاری وکیل نے مہلت مانگی جس کا صاف اور واضح مطلب ہے کہ حکومت سندھ کے پاس سندھ اسمبلی کے نیب کے خاتمہ کا آرڈیننس منظور کرنے کے غیر قانونی اقدام کا کوئی جواز نہیں ہے ۔یہ کرپشن کے خلاف عوام کی پہلی کامیابی ہے ۔

الطاف شکور نے مزید کہا کہ پاسبان نے عزم کیا ہوا ہے کہ جب تک سندھ کے عوام پر ظلم کے پہاڑ توڑنے والے اسمبلیوں میں بیٹھے ہوئے ظالم وڈیروں ،چوروں اور لٹیروں کو دریائے سندھ کے پانی میں چند غوطے نہیں دیئے جاتے ،پاسبان او رعوام چین سے نہیں بیٹھیں گے ۔ علاوہ ازیں سندھ ہائیکورٹ کی تین رکنی بنچ نے نیب کیس کی سماعت 9،اکتوبر تک کیلئے ملتوی کردی #