بورے والا، مسلح ڈکیتی کی واردات کے دوران مزاحمت پر ڈاکوئوں کی فائرنگ سے نوجوان جاں بحق،باپ ،ماں اور بڑا بھائی شدید زخمی

اتوار ستمبر 19:43

بورے والا(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 17 ستمبر2017ء) بوریوالہ کے نواحی قصبہ اڈہ کچی پکی پر مسلح ڈکیتی کی واردات کے دوران مزاحمت پر تین ڈاکوئوں کی فائرنگ سے 20سالہ نوجوان جاں بحق ،باپ ،ماں اور بڑا بھائی شدید زخمی ہسپتال منتقل واقعات کے مطابق موضع سلدیرا کے گائو ں چک 52/KBاڈہ کچی پکی کے دوکاندار محمد اشرف غفاری گذشتہ شب اپنے اہل خانہ کے ہمراہ گھر کے صحن میں سو رہے تھے کہ اچانک اڑھائی بجے شب تین نا معلوم مسلح ڈاکو دیوار پھاند کر گھر میں داخل ہو گئے ابھی دو ڈاکو صحن میں اترے تھے اور ایک چھت پر بیٹھا تھا کہ آہٹ پر تمام اہل خانہ جاگ گئے ۔

محمد اشرف اور اس کے دو بیٹوں 20سالہ عاطف اشرف 28سالہ آصف جاوید ڈاکوئوں سے گتھم گھتا ہو گئے اور انہیں قابو کر لیا اسی اثناء میں چھت پر موجود تیسرے ڈاکو نے پسٹل سے فائرنگ شروع کر دی جس کی زد میں آکر محمد اشرف غفاری اور ان کا بڑا بیٹا آصف جاوید شدید زخمی ہو گئے اور چھوٹا بیٹاعاطف جو کہ ڈی ایچ کیو ہسپتال میں ڈسپنسر کلاس کا طالب علم ہے ،موقع پر جاں بحق ہو گیا ۔

(جاری ہے)

ڈاکوئوں نے لاٹھیاں مار مار کر محمد اشرف غفاری کی بیوی ظفراں بی بی کو بھی شدید زخمی کر دیا ۔چیخ و پکار پر اہل دیہہ جاگ گئے اور چورچور کا شور مچنے پر ملزمان ایک پسٹل اور جوتے چھوڑ کر فرار ہو گئے اطلاع ملتے ہی ایس ایچ او تھانہ فتح شاہ خالد خان ایس ایچ او ساہوکا محمد مظہر ،ایس ایچ او لڈن عبدالباری گوجر کے علاوہ ڈی ایس پی آرگنائزڈ کرائم ٹکا ء محمد سجاد خان بھی ایلیٹ کی نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے اور نعش کے علاوہ زخمیوں کو تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال بورے والا پہنچایا ۔

ابتدائی طبی امداد کے بعد تشویشناک حالت میں آصف جاوید کو نشتر ہسپتال ملتان ریفر کر دیا گیا مسلح ڈکیتی اور قتل کے اس اندوہناک واقعہ کے خلاف آج اڈہ کچی پکی کے تمام بازار اور مارکیٹیں احتجاجاً بند رہیں اور علاقہ کے لوگوں نے پولیس انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ ملزموں کا جلد از جلد سراغ لگا کر انہیں قانون کے کٹہرے میں لایا جائی#