18 میں پورے پاکستان تبدیلی کا انقلاب آئیگا ،ْعمران خان

شاہد خاقان عباسی کٹھ پتلی وزیر اعظم ہیں ،ْ زرداری اور نوازشریف کے آنے تک ہر پاکستانی پر35 ہزار قرضہ تھا ،ْجمہوریت میں میرٹ اور بادشاہت میں خون کار شتہ ہے ،ْمیرٹ ہو تو بلاول بھٹو اور مرادسعید کا کوئی مقابلہ نہیں ،ْ نواز حکومت پاکستان کو اخلاقی پستی کی جانب لے کر جارہی ہے ،ْنواز شریف اپنی کرپشن بچانے کیلئے پاکستان کی فوج اور عدلیہ کو بدنا کر رہے ہیں ،ْمجھے لگتا پاکستان کو بچانے کے لیے ایک مرتبہ پھر سڑکوں پر نکلنا پڑے گا ،ْجلسے سے خطاب

اتوار اکتوبر 15:30

بونیر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 08 اکتوبر2017ء) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ 2018 کے انتخابات میں پورے پاکستان میں تبدیلی کا انقلاب آئیگا ،ْشاہد خاقان عباسی کٹھ پتلی وزیر اعظم ہیں ،ْ زرداری اور نوازشریف کے آنے تک ہر پاکستانی پر35 ہزار قرضہ تھا ،ْجمہوریت میں میرٹ اور بادشاہت میں خون کار شتہ ہے ،ْمیرٹ ہو تو بلاول بھٹو اور مرادسعید کا کوئی مقابلہ نہیں ،ْ نواز حکومت پاکستان کو اخلاقی پستی کی جانب لے کر جارہی ہے ،ْنواز شریف اپنی کرپشن بچانے کیلئے پاکستان کی فوج اور عدلیہ کو بدنا کر رہے ہیں ،ْمجھے لگتا پاکستان کو بچانے کے لیے ایک مرتبہ پھر سڑکوں پر نکلنا پڑیگا۔

اتوار کو بونیر میں جلسے سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ ماضی میں کامیابی نہیں ملی لیکن اب بونیر پی ٹی آئی کا ہوگا۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ قوم تب اٹھتی ہے جب وہ اپنا کردار ٹھیک کرتی ہے۔عمران خان نے کہا کہ قومی اسمبلی نیپارٹی صدر کے انتخاب سے متعلق قانون پاس کیا، نواز شریف نے صرف ادارے تباہ نہیں کیے، قوم کی اخلاقیات بھی تباہ کیں۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کہتے ہیں کہ نوازشریف اب بھی میرے وزیراعظم ہیں ،ْوہ ایک کٹھ پتلی وزیراعظم ہیں۔

انہوںنے کہاکہ ہمیں عوام کے پیسے کی حفاظت کرنی ہے، کبھی کسی کرپٹ لیڈر کو حکومت میں نہیں آنے دینا، قوم فیصلہ کرلے ہمیں ظلم کا مقابلہ کرنا ہے۔تحریک انصاف کے سربراہ نے کہا کہ قومیں کبھی بمباری یاشکست سے تباہ نہیں ہوتیں بلکہ قومیں اخلاقیات ختم ہونے سے تباہ ہوتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ چوروں اور ڈاکوؤں کی کرپشن کی قیمت عوام غربت سے ادا کرتی ہے، آصف زرداری اور نوازشریف قوم کے سب سے بڑے ڈاکو ہیں جبکہ مولانا فضل الرحمان دونوں کے ساتھ ہی فٹ ہوجاتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ زرداری اور نوازشریف کے آنے تک ہر پاکستانی پر35 ہزار قرضہ تھا، اس وقت ہر پاکستانی پر ایک لاکھ 30 ہزار روپیکا قرضہ ہوگیاہے۔عمران خان نے کہا کہ ملک میں 45 فیصد بچے خوراک کی کمی کی بیماریوں کا شکار ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہر سال ایک ہزار ارب روپے منی لانڈرنگ سے باہر چلے جاتے ہیں ،ْاگر یہ پیسہ باہر نہ جائے تو یہاں فیکٹریاں، اسکول اور ہسپتال بن سکتے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ نوازشریف کی ساری کوششیں منی لانڈرنگ کی سزا سے بچنے کیلئے ہیں، اگر سزا ہوگئی تو تمام جائیدادضبط اور بینک اکاؤنٹس منجمد ہوجائیں گے۔انہوں نے کہا کہ جمہوریت میں میرٹ اور بادشاہت میں خون کار شتہ ہے، اسی بنیاد پر جمہوریت نے بادشاہت کو شکست دی۔انہوں نے کہا کہ میرٹ ہو تو بلاول بھٹو اور مرادسعید کا کوئی مقابلہ نہیں، مراد سعید میرٹ پر اوپر آیا، پیپلز پارٹی میں میرٹ ہوتی تو بلاول اور اعتزاز احسن میں کیا مقابلہ ہے۔

انہوں نے کہا کہ گزشتہ چار سالوں میں خیبرپختونخوا میں غربت آدھی ہوگئی ہے۔ عمران خان نے کہاکہ نواز شریف اپنی کرپشن بچانے کیلئے پاکستان کی فوج اور عدلیہ کو بدنا کر رہے ہیں ،ْمجھے لگتا پاکستان کو بچانے کے لیے ایک مرتبہ پھر سڑکوں پر نکلنا پڑے گا۔انتخابی اصلاحات بل 2017 کے حوالے سے کہا کہ ملک میں ایک ایسا قانون پاس کیا گیا کہ جھوٹ بولنے والا یا چوری کرنے والا کسی بھی سیاسی جماعت کا صدر بن سکتا ہے۔

انہوں نے دعویٰ کیا کہ تحریک انصاف 2018 میں ہونے والے عام انتخابات میں پاکستان مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کو شکست دے کر کامیابی حاصل کرے گی اور اپنی حکومت کے ابتدائی چار سالوں کے دوران ہی پاکستان کی نصف غربت ختم کر دے گی۔عمران خان نے کہا کہ مسلمان ہمیشہ نبی ؐ کی مثال کی تقلید کرتا ہے ،ْحضورؐ نے مدینہ کی مثالی ریاست قائم کی اور پھر پوری دنیا میں عروج حاصل کیا، نبی ؐ نے قوم کے کردار کو ٹھیک کیا، لوگوں کو حق و سچ پر کھڑا کیا، اپنے کردار سے قوم کا کردار بلند کیا، مسلمان 700 سال تک دنیا کی سپرپاور رہے ،ْدنیا میں عروج حاصل کرنے کے لیے قوم کو اپنا کردار ٹھیک کرنا پڑتا ہے جبکہ جس کے لیڈر صادق و امین ہوتے ہیں وہ عظیم قوم بنتی ہے۔