نیب نے میاں نوازشریف کے داماد کیپٹن (ر)صفدرکو اسلام آباد ایئرپورٹ سے گرفتار کرلیا-آج احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا‘نیب اہلکاروں اور مسلم لیگ نون کے کارکنوں کے درمیان تلخ کلامی

Mian Nadeem میاں محمد ندیم پیر اکتوبر 08:25

نیب نے میاں نوازشریف کے داماد کیپٹن (ر)صفدرکو اسلام آباد ایئرپورٹ سے ..
اسلام آباد (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔09 اکتوبر۔2017ء) نیب لاہور نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے داماد کیپٹن(ر)صفدر کو پاکستان پہنچتے ہی گرفتارکر لیا ہے۔کیپٹن ریٹائرڈ صفدر اپنی اہلیہ مریم صفدر کے ہمراہ لندن سے براستہ دوحہ اسلام آباد ایئرپورٹ پہنچے جہاں مسلم لیگ (ن) کے مرکزی راہنماﺅں نے ان کا استقبال کیا۔ اس موقع پر سیکورٹی کے بھی انتہائی سخت انتظامات کئے گئے تھے۔

دوسری جانب نیب لاہور کی ٹیم نے ایئرپورٹ کے راول لاﺅنج سے باہر نکلتے ہی عدالتی احکامات کی تعمیل کرتے ہوئے کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو حراست میں لے لیا۔ مسلم لیگ (ن) کے کارکنوں کی جانب سے کیپٹن صفدر کی گرفتاری کے خلاف مزاحمت کی گئی اور کارکن نیب کی گاڑی کے آگے لیٹ گئے جب کہ گاڑی پر مکے بھی مارے۔

(جاری ہے)

کیپٹن صفدر نے گاڑی سے باہر نکل کر کارکنوں کو گاڑی کے آگے سے ہٹنے کی ہدایت کی جبکہ آصف کرمانی کی جانب سے بھی لیگی کارکنوں سے کہا گیا کہ پارٹی قیادت کا حکم ہے کہ کسی قسم کی مزاحمت نہ کی جائے لہذا تمام کارکن گاڑی کے آگے سے ہٹ جائیں۔

بعد ازاں دانیال عزیز کی جانب سے کارکنوں کو نیب کی گاڑی کے آگے سے ہٹایا گیا جس کے بعد نیب حکام کیپٹن صفدر کو ساتھ لے کر ایئرپورٹ سے روانہ ہو گئے۔کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو اسلام آباد کے علاقے میلوڈی میں واقع نیب کے سیل منتقل کر دیا گیا ہے جہاں سے انہیں صبح احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا۔نیب ٹیم نے اسماعیل ڈوگر کی سربراہی میں کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو حراست میں لیا ۔

قبل ازیں نیب لاہور کی ٹیم عدالتی احکامات کے ساتھ کیپٹن صفدر کو گرفتار کرنے ایئرپورٹ پہنچی اور انہوں نے راول لاﺅنج کے اندر جانے کی اجازت مانگی تو اے ایس ایف حکام نے انہیں اندر جانے سے روک دیا۔اے ایس ایف حکام نے موقف اختیار کیا کہ سیکورٹی وجوہات کی بنا پر نیب کی ٹیم کو راول لاﺅنج میں جانے کی اجازت نہیں دی جا سکتی کیونکہ لاﺅنج کے اندر گرفتاری سے وہاں بدنظمی پیدا ہونے اور دیگر مسافروں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

نیب کی ٹیم نے سیکرٹری قومی اسمبلی کو خط بھی ایک خط کے ذریعے آگاہ کیا تھا کہ وہ عدالتی احکامات کی تعمیل کرتے ہوئے کیپٹن صفدر کو گرفتار کریں گے۔مسلم لیگ (ن )کے راہنما پرویز رشید، آصف کرمانی، مریم اورنگزیب اور دیگر سینئر راہنما ایئرپورٹ پر موجود تھے۔ آصف کرمانی نے کہا کہ کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو گرفتار کیا گیا تو قانونی راستہ اختیار کریں گے۔

اس سے قبل نیب لاہور کی جانب سے لکھے گئے خط میں کہا گیا تھا کہ احتساب عدالت نے 2 اکتوبر کو کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کےناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے ہوئے ہیں۔ خط کے مطابق ملزم بیرون ملک تھا اور آج رات بینظیر بھٹو انٹرنیشنل ایئرپورٹ اسلام آباد سے وطن واپس آیا ہے۔نیب ٹیم جیسے ہی کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر کو لے کر نیب ہیڈ کوارٹر پہنچی تو لیگی کارکنان بھی وہاں پہنچ گئے اور دھرنا دے دیا۔کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو نیب ریفرنس کے سلسلے میں آج اسلام آباد کی احتساب عدالت میں پیش کیا جائے گا جبکہ ان کی اہلیہ مریم نواز بھی عدالت میں پیش ہوں گی۔