مخالفانہ سیاسی نقطہ نظر کو جبراً دبانا قابل مذمت ہے، نوازشریف

سوشل میڈیا سمیت، آزادی اظہار رائے کا احترام اور تحفظ حکومت کی آئینی ذمہ داری ہے،وزارت داخلہ اس صورتحال کا فوری نوٹس لے اور گمشدہ افراد کی بازیابی کو یقینی بنائے،سابق وزیراعظم کا سوشل میڈیا صارفین کی گمشدگی اور ہراساں کرنے کی کوششوں پر اظہار تشویش

ہفتہ اکتوبر 15:07

مخالفانہ سیاسی نقطہ نظر کو جبراً دبانا قابل مذمت ہے، نوازشریف
لندن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 اکتوبر2017ء) سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ(ن)کے صدر میاں نوازشریف نے کہا ہے کہ مخالفانہ سیاسی نقطہ نظر کو جبرا دبانا قابل مذمت ہے، سوشل میڈیا سمیت، آزادی اظہار رائے کا احترام اور تحفظ حکومت کی آئینی ذمہ داری ہے،،وزارت داخلہ اس صورتحال کا فوری نوٹس لے اور گمشدہ افراد کی بازیابی کو یقینی بنائے۔

(جاری ہے)

ہفتہ کو سابق وزیراعظم نے مسلم لیگ(ن)کے موقف کی حمایت کرنے والے سوشل میڈیا صارفین کی گمشدگی اور انہیں ہراساں کرنے کی کوششوں پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اسے آزادی رائے پر حملہ قرار دیا۔

نواشریف نے کہا کہ ملکی قانون، شائستگی اور اپنی اقدار کے دائرے میں رہتے ہوئے ہر کسی کو اپنی رائے کے اظہار یا کسی دوسرے کی رائے سے اختلاف کا حق حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ سوشل میڈیا سمیت، آزادی اظہار رائے کا احترام اور تحفظ حکومت کی آئینی ذمہ داری ہے، مخالفانہ سیاسی نقطہ نظر کو جبرا دبانا قابل مذمت ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ میں آزادی اظہار رائے کے حق پر پختہ یقین رکھتا ہوں لہذا وزارت داخلہ اس صورتحال کا فوری نوٹس لے اور گمشدہ افراد کی بازیابی کو یقینی بنائے۔