وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی برائے سی پیک کا اجلاس

توانائی کے شعبے، ایم ون پراجیکٹ، کراچی سرکلر ریلوے، سڑکوں،ریلوے کے بنیادی ڈھانچے کی تعمیر اور ملک کے مختلف علاقوں میں خصوصی اقتصادی زونز کے قیام سے متعلق چین پاکستان اقتصادی راہداری کے منصوبوں پر پیشرفت کا جائزہ لیا گیا،چین پاکستان اقتصادی راہداری پر فوری عملدرآمد اور منصوبوں کی تکمیل حکومت کی اولین ترجیح ہے، اس سے پاکستان کو بڑے سماجی اور اقتصادی فوائد حاصل ہوں گے،وزیراعظم شاہد خاقان عباسی

جمعہ جنوری 23:19

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی برائے سی پیک کا ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جنوری2018ء) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت وزیراعظم آفس میں چین پاکستان اقتصادی راہداری سے متعلق کابینہ کمیٹی کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں توانائی کے شعبے، ایم ون پراجیکٹ، کراچی سرکلر ریلوے سمیت سڑکوں اور ریلوے کے بنیادی ڈھانچے کی تعمیر اور ملک کے مختلف علاقوں میں خصوصی اقتصادی زونز کے قیام سے متعلق چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت مختلف منصوبوں پر پیشرفت کا جائزہ لیا گیا۔

اجلاس میں 21 نومبر 2017ء کو اسلام آباد میں ہونے والے مشترکہ تعاون کمیٹی کے ساتویں اجلاس کے تناظر میں چین سے اعلیٰ سطحی وفد کے دورے کی تیاریوں کا بھی جائزہ لیا گیا۔ سیکرٹری پاور ڈویژن نے اجلاس کو گوادر میں 300 میگا واٹ کے منصوبے سمیت بجلی کے شعبے کے مختلف منصوبوں کے بارے میں آگاہ کیا۔

گوادر کا بجلی کا منصوبہ گوادر اور ارد گرد کے علاقوں کی بجلی کی ضرورت پوری کرنے کیلئے لگایا جا رہا ہے۔

اجلاس کو مختلف پیداواری منصوبوں سے بجلی کے حصول کیلئے ٹرانسمیشن لائنوں کے قیام سے متعلق بھی آگاہ کیا گیا۔ چیئرمین این ایچ اے نے اجلاس کو رائے کوٹ، تھاکوٹ روڈ، خضدار، بسیمہ روڈ، ڈیرہ اسماعیل خان، ژوب روڈ کو بہتر بنانے اور دیگر منصوبوں سمیت سڑکوں کے مختلف منصوبوں پر پیشرفت کے بارے میں آگاہ کیا۔ وزیراعظم نے ہدایت کی کہ جاری منصوبوں پر کام کی رفتار تیز کرنے کے ساتھ ساتھ چین کے ساتھ مشاورت سے مستقبل کے منصوبوں کیلئے بھی طریقہ کار وضع کیا جائے تاکہ ان پر بروقت عملدرآمد کو یقینی بنایا جا سکے۔

چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت ملک کے مختلف علاقوں میں خصوصی اقتصادی زونز کے قیام کے حوالے سے وزیراعظم نے ہدایت کی کہ ترجیحی خصوصی اقتصادی زونز کے تیزی کے ساتھ قیام کیلئے چین کے ساتھ بھی فعال رابطہ رکھا جائے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ ان زونز کے ترجیحی قیام کے دوران رابطے، انسانی وسیلے کی دستیابی اور مطلوبہ خام مال سمیت مختلف عوامل کو بھی مدنظر رکھا جائے۔

وزیراعظم نے کہا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری پر فوری عملدرآمد اور منصوبوں کی تکمیل حکومت کی اولین ترجیح ہے کیونکہ اس سے پاکستان کو بڑے سماجی اور اقتصادی فوائد حاصل ہوں گے۔ انہوں نے ہدایت کی کہ سرمایہ کاری بورڈ اور متعلقہ وفاقی محکموں کو سی پیک کے مختلف منصوبوں کی بروقت تکمیل کیلئے صوبائی حکومتوں کے ساتھ مسلسل رابطہ رکھنا چاہیے۔

Your Thoughts and Comments