قصور میں جنسی درندگی کا نشانہ بننے والی بچی لائبہ کے والدین نے خود کو وزیراعلی ہائوس کے سامنے آگ لگانے کی دھمکی دے دی

muhammad ali محمد علی ہفتہ جنوری 20:56

قصور میں جنسی درندگی کا نشانہ بننے والی بچی لائبہ کے والدین نے خود کو ..
لاہور (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 جنوری 2018ء) قصور میں جنسی درندگی کا نشانہ بننے والی بچی لائبہ کے والدین نے خود کو وزیراعلی ہائوس کے سامنے آگ لگانے کی دھمکی دے دی ہے۔ تفصیلات کے مطابق قصور میں گزشتہ برس جنسی درندگی کا نشانہ بنا دیے جانے والی معصوم لائبہ کے والدین کی جانب سے ایک مرتبہ پھر انصاف فراہم کرنے کی اپیل کی گئی ہے۔ لائبہ کے والدین نے پنجاب حکومت اور پولیس کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔

لائبہ کے والدین کا کہنا ہے کہ پولیس نے تمام معاملے میں ان کی کوئی مدد نہیں کی۔

زینب قتل کیس کے بعد جس شخص کا خاکہ جاری کیا گیا وہ وہی خاکہ ہے جو پولیس نے 6 ماہ قبل ان کی بچی کے کیس میں بھی جاری کیا تھا۔ لائبہ کے والدین نے وزیراعلی پنجاب شہباز شریف کو بھی شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے انہیں بزدل شخص قرار دیا۔ لائبہ کے والدین نے دھمکی دی ہے کہ اگر انہیں انصاف نہ ملا تو وہ خود کو وزیراعلی ہاوس کے سامنے آگ لگا دیں گے۔ واضح رہے کہ لائبہ گزشتہ ایک برس کے دوران زیادتی کا شکار ہونے والی بچیوں میں سے زندہ بچ جانے والی واحد بچی ہے اور ان دنوں شدید ذہنی و جسمانی صدمے سے دوچار ہے۔

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments