یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی لاہور کی بلڈ ڈونرز سوسائٹی کے زیر اہتمام دو روزہ پروگرام ’بیماری سے آزاد یو ای ٹی‘ اختتام پذیر ہو گیا

جمعہ فروری 22:19

لاہور ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 فروری2018ء) یونیورسٹی آف انجنیئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی لاہور کی بلڈ ڈونرز سوسائٹی نے بلقیس سرور فائونڈیشن ، کاشف اقبال تھلسمیا کیئر سنٹر اور یوی ای ٹی ہیلتھ کلینک کے تعاون سے منعقدہ دو روزہ پروگرام بعنوان ’بیماری سے آزاد یو ای ٹی‘ اختتام پذیر ہو گیا۔اس میں خون کی سکریننگ، تھیلیسیمیا ، آنکھوں کا معائنہ سمیت پانچ موذی بیماریوں کے ٹیسٹ کیئے گئے اور دیگرمتعلقہ پیچیدہ معاملات کے حوالے سے آگہی واک،بنیادی زندگی کے تحفظ کیلیے ابتدائی طبی امداد ک تربیتی سیشنز بھی شامل تھے۔

اختتامی تقریب میںوائس چانسلر یو ای ٹی لاہور پروفیسر ڈاکٹر فضل احمد خالد،ڈین فیکلٹی آف آرکٹکچرپروفیسر ڈاکٹر غلام عباس انجم،ڈائریکٹر سٹوڈنٹ آفیئر پروفیسر ڈاکٹر آصف علی قیصر، یو ای ٹی بلڈ دونر سوسائٹی کے ایڈوائزر عارف حسین سمیت کثیر تعداد میں طلباو طالبات نے شرکت کی۔

(جاری ہے)

اس اجتماع کا مقصد خون ، اسکی بیماریوں سے آگاہ کرنے کے ساتھ ساتھ خون کا عطیہ دینے کیلیے ترغیب دلانا اور ایک دوسرے کو اپنے تجربات میں شریک کرنا تھا۔

اس موقع پر وائس چانسلر یو ای ٹی لاہور پروفیسر ڈاکٹر فضل احمد خالد نے حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خون کا عطیہ کرنا انسانیت کی تعظیم اور زندگی کو اہمیت اور نصب العین دینا ہے۔اس سے بیمار افراد کو نئی زندگی ملتی ہے اور معاشرے کی خدمت کرنے کا جذبہ اور سوچ حاصل ہوتی ہے۔انہوں نے کہا کہ اسلام میں بھی یہی تلقین کی گئی کہ انسانوں کی زندگیوں کو بچایا جائے تاکہ صحتمند اور مثبت رویوں سے بھر پور معاشرہ پھل پھول سکے۔

وائس چانسلر نے کہا کہ خون دینے سے اس میں موجود پیچیدگیوں کو سمجھنا اور تندرست زندگی گزارنے کا لائحہ عمل اپنانے میں مدد میسر ہوتی ہے لہذا اس کام میں ہچکچانا نہیں چاہیے اور انسانی زندگی کو مستحکم کرنے میں نوجوان طبقے سے بہت امیدیں وابستہ ہیںاس لیے نوجوان نسل کو چاہیے کہ اس مقدس مقصد میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں۔تقریب میں جامعہ کے ڈینز، اساتذہ، انتظامیہ،بلڈ ڈونرز سوسائٹی کے ممبران اور طلبا ء و طالبات کی کثیر تعدادکی موجودگی میں مہمانوں اور منتظمین میں شیلڈز بھی تقسیم کی گئیں ۔

متعلقہ عنوان :