سکھر کا بیوٹیفکیشن پلان شہر کو خوبصورت بنادے گا، میئر سکھر ارسلان اسلام شیخ

سکھر کے خوبصورت محل وقوع ، تاریخی عمارتوں اور دریائے سندھ اور نہروں نے اس کی دلکشی میں اضافہ کردیا ہے

جمعہ فروری 22:24

سکھر (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 02 فروری2018ء) میئر سکھر ارسلان اسلام شیخ نے کہا ہے کہ سکھر کا بیوٹیفکیشن پلان شہر کو خوبصورت بنادے گا، سکھر کے خوبصورت محل وقوع ، تاریخی عمارتوں اور دریائے سندھ اور نہروں نے اس کی دلکشی میں اضافہ کردیا ہے، دونوں اطراف سے نکلنے والی نہروں کو جدید رنگین روشنیوں سے مسحورکن بنایا جائے گا ، صرف ضرورت اس امر کی ہے کہ ان مقامات کو تفریحی سرگرمیوں کے مراکز میں تبدیل کردیا جائے، سٹی بیوٹیفکیشن پلان کا مقصد یہی ہے ۔

انہوں نے کہا ہے کہ شہر کے 29 اہم مقامات بشمول نہریں اور دریاء کو جدید ڈیزائننگ سے دیدہ زیب بنایا جائے گا، اس دوران شہر کی اہم سڑکوں کی تعمیر بھی مکمل ہوجائے گی۔ انہوں نے کہا کہ رنگین روشنیوں سے مزین فوارے ہلکی موسیقی کے ساتھ شہریوں کے دلوں کو لبھائیں گے، مذکورہ مقامات ماضی میں عدم توجہی کے باعث بدنما نظر آتے ہیں لیکن اسی سال میں تزئین و آرائش کے کاموں کی تکمیل کے بعد یہ شہر سیاحوں کے لئے بھی دلکشی کا باعث بنے گا ، میئر سکھر نے کہا ہے کہ ان مقامات میں پرانہ و روہڑی جانے والی 3 ریلوے ٹنلز ، کلمہ چوک مینارہ روڈ ، منزل گاہ کے سامنے فوڈ پوائنٹ ، ٹیک چند پارک ( نزد ایوان صنعت و تجارت) ملٹری روڈ کی سینٹرل بیلٹ ، محمد چوک حسینی روڈ اور ہوا بندر کے پوائنٹس بھی شامل ہیں ، ان جگہوں کی تعمیر ، تزئین کے لئے ماہرین کی مشاورتی ٹیم فزیبلیٹی ، منصوبہ بندی کررہی ہے جسے حتمی شکل دینے کے بعد تعمیراتی کام کا آغاز ہوگا، اسی طرح شہر کی اہم سڑکوں کی از سر نو تعمیر کے کاموں کا مارچ میں آغاز ہوگا ، شہر کے گنجان آباد علاقوں نیوپنڈ، نواں گوٹھ ، پرانا سکھر اور دوسرے علاقوں سے فراہمی و نکاسی آب کا دیرینہ مسئلہ حل ہوجائے گا اور پرانی بوسیدہ لائنوں کو تبدیل کیا جارہا ہے، جسے ماضی میں اہمیت نہیں دی گئی ، ان لائنوں کے ساتھ ضرورت کے مطابق پمپنگ سسٹم، والووز کی اپ گریڈیشن بھی کی جارہی ہے ، آئندہ موسم سرما یا گرمیوں کے دوران شہریوں کو پانی کی قلت کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا جو موجودہ بلدیاتی قیادت اور حکومت سندھ کا سکھر کے شہریوں کے لئے تحفہ ہوگا ۔

(جاری ہے)

انہوں نے ان معاملات میں شہریوں کے تعاون اور مشاورت کی ضرورت پر بھی زور دیا ہے۔

متعلقہ عنوان :