ووٹرز نے عمران خان کو مسترد کردیا ،پی ٹی آئی کے تمام ورکرز اور نظریاتی حامیوں پر ترس آرہا ہے،ریحام خان

لودھراں ضمنی انتخاب میں پی ٹی آئی کو عبرتناک شکست ہوئی ‘ پی ٹی آئی قیادت کو جوابدہ ہونا ہوگا‘ پہلی بار کوئی جماعت اقتدار میں آنے سے پہلے ہی مقبولیت کھو رہی ہے‘ علی خان ترین کے انتخاب میں کیا نواز شریف کی سازش تھی جب یہ لوگ بہت زیادہ بوکھلا جاتے ہیں تو مجھ جیسے لوگوں پر حملے کرتے ہیں‘ ہے کیونکہ یہ نظریے سے جدا ہوگئے ہیں‘ یہ لوگ نواز شریف اور مریم نواز کو سازش کی وجہ قرار دیتے ہیں،سماجی کارکن ریحام خان کی نجی ٹی وی سے گفتگو

منگل فروری 15:58

ووٹرز نے عمران خان کو مسترد کردیا ،پی ٹی آئی کے تمام ورکرز اور نظریاتی ..
لندن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 فروری2018ء) چیئرمین پی ٹی آئی کی سابق اہلیہ اور سماجی کارکن ریحام خان نے کہا ہے کہ لودھراں ضمنی انتخاب میں پی ٹی آئی کو عبرتناک شکست ہوئی ہے‘ پی ٹی آئی قیادت کو آج جوابدہ ہونا ہوگا‘ پہلی بار کوئی جماعت اقتدار میں آنے سے پہلے ہی مقبولیت کھو رہی ہے‘ علی خان ترین کے انتخاب میں کیا نواز شریف کی سازش تھی پی ٹی آئی کے تمام ورکرز اور نظریاتی حامیوں پر ترس آرہا ہے جب یہ لوگ بہت زیادہ بوکھلا جاتے ہیں تو مجھ جیسے لوگوں پر حملے کرتے ہیں‘ ووٹرز نے عمران خان کو مسترد کردیا ہے کیونکہ یہ نظریے سے جدا ہوگئے ہیں‘ یہ لوگ نواز شریف اور مریم نواز کو سازش کی وجہ قرار دیتے ہیں۔

منگل کو ریحام خان نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ لودھراں کے ضمنی انتخاب میں پی ٹی آئی کو عبرتناک شکست ہوئی ہے۔

(جاری ہے)

پی ٹی آئی کی قیادت کو آج جواب دہ ہونا ہوگا۔ پہلی بار کوئی پارٹی اقتدار میں آنے سے پہلے ہی مقبولیت کھو رہی ہے۔ مجھے پی ٹی آئی کے تمام ورکرز اور نظریاتی حامیوں پر ترس آرہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب یہ لوگ بہت زیادہ بوکھلا جاتے ہیں تو مجھ جیسے لوگوں پر حملہ کرتے ہیں۔

یہ نواز شریف یا مریم نواز کو سازش کی وجہ سمجھتے ہیں۔ کیا علی خان ترین کے انتخاب میں نواز شریف کی سازش تھی یا خدانخواستہ ریحام خان کی صلاح ووٹرز نے عمران خان کو مسترد کردیا ہے کیونکہ آپ نظریے سے جدا ہوگئے ہیں۔ پی ٹی آئی کو بہانہ بازی ختم کرنا ہوگی آپ نے موروثی سیاست کو جگہ دی ہے آپ نے ووٹر پر واضح کردیا موروثی سیاست ہے اور ایسا ہی ہوگا آپ نے بتادیا کہ ساری پارٹیوں سے کچرا پی ٹی آئی میں لائیں گے۔ پی ٹی آئی اسٹیٹس کو پر حملہ کررہی تھی خود ہی اس کی سستی کاپی بن کر ابھری ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی میں تین دھڑے کھل کر سامنے آگئے ہیں۔