پاکستان سٹینڈرڈزاینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی کا کریک ڈاؤن،

اچاراور مصالحہ جات بنانے والی دو فیکٹریاں سیل غیر معیاری اور بغیر لائسنس کام کرنیوالی کمپنیوں کیخلاف کارروائی جاری رکھی جائے گی،ڈی جی پی ایس کیو سی اے

منگل مارچ 20:36

پاکستان سٹینڈرڈزاینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی کا کریک ڈاؤن،
لاہور۔13 مارچ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 مارچ2018ء) وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی رانا تنویر حسین کی ہدایت پر پاکستان سٹینڈرڈزاینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی (پی ایس کیو سی اے )نے اچار اور مصالحہ جات بنانے والی فیکٹریوں کیخلاف کریک ڈاؤن شروع کردیا،دو فیکٹریاں سیل جبکہ ایک فیکٹری کا سامان قبضے میں لے لیا،وفاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی رانا تنویر حسین کی ہدایت پرڈی جی پی ایس کیو سی اے انجینئر خالد صدیق نے غیر معیاری اور غیر قانونی طور پر اچار اور مصالحہ جات تیار کرنیوالی کمپنیوں کیخلاف خصوصی ٹاسک فورس قائم کردی،جس نے شہربھر میں کریک ڈاؤن شروع کردیا،خصوصی ٹاسک فورس نے فیروزپور روڈ، گجومتہ اورروہی نالہ پر کارروائی کرتے ہوئے الجنت فوڈز، ایم ایس فوڈز کو سیل کردیا اور ان کے گوداموں میں موجود ہزاروں کلو تیار سامان کو قبضہ میں لیکر فروخت سے روک دیاجبکہ الشفاء فوڈز کا سامان قبضہ میں لے لیا گیا،الجنت فوڈز اور الشفاء فوڈز پی ایس کیو سی اے کے لائسنس کے بغیر غیر قانونی طور پر اچار، سرقہ اور شہد تیار کر رہے تھے جبکہ ایم ایس فوڈز مشہور برانڈ کی پیکنگ میں مصالحہ جات تیار کرنے میں ملوث ہونے کے ساتھ پی ایس کیو سی اے کا لائسنس بھی نہیں رکھتی تھی،ڈی جی پاکستان سٹینڈرڈز اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی انجینئر خالد صدیق کا کہنا ہے کہ غیر معیاری اور بغیر لائسنس کام کرنیوالی کمپنیوں کے خلاف سخت کارروائی جاری رکھی جائے گی۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں غیر قانونی کام کرنیوالی مصالحہ جات اور اچار کی فیکٹریوں کو سیل کرنے کیلئے خصوصی ٹیمیں تشکیل دیدی گئی ہیں اور ان کو موقع پر سیل کر دیا جائیگا،انہوں نے افسران کو ہدایت کی کہ پاکستان سٹینڈرڈ مارک کا غیر قانونی استعمال کرنے والوں کیساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے،انہوں نے کہا کہ تمام غیر قانونی طور پر کام کرنیوالی کمپنیوں کا ریکارڈ اکٹھا کیا جا رہا ہے اور ایک ایک کر کے تمام کا صفایا کر دیا جائیگا۔

متعلقہ عنوان :