برطانیہ میں آف شور کمپنیوں کے ذریعے کروڑوں پاﺅنڈزکی جائیدادیں خریدنے والے پاکستانیوں کے خلاف تحقیقات جاری

Mian Nadeem میاں محمد ندیم بدھ مارچ 14:21

برطانیہ میں آف شور کمپنیوں کے ذریعے کروڑوں پاﺅنڈزکی جائیدادیں خریدنے ..
لندن(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔ 14 مارچ۔2018ء) راولپنڈی کے آریا محلے میں نجی ہسپتال چلانے والی خاتون ڈاکٹر سمیت لندن میں منشیات کے الزام میں گرفتار پاکستانی بھی برطانیہ میں آف شور اثاثہ جات کے مالک ہیں۔تحقیقات کے مطابق راولپنڈی میں آریا محلے کی تنگ گلیوں میں قائم اجمل ہسپتال کی ڈاکٹر رضیہ اجمل بھی آف شور کمپنی میل کراس لیمٹڈ کی مالکن ہیں اور مذکورہ کمپنی کے ذریعے ستمبر 2002 میں لندن کے علاقے وی ویلی میں چھ کمروں کا ٹیرسڈ ہاﺅس 4 لاکھ 75 ہزار پاﺅنڈ (7 کروڑ 30 لاکھ 93 ہزار روپے) میں خریدا گیا تھا جس کی موجودہ مالیت 9 لاکھ 65 ہزار پاﺅنڈ (15 کروڑ روپے سے زائد) ہے۔

متحدہ عرب امارت میں مقیم پاکستانی صنعت کار آصف حفیظ بھی برطانیہ میں دو فارم ہاﺅسز کے مالک ہیں، انہیں اگست 2017 کو لندن میں منشیاب کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا اور وہ اپنے دفاع کے لیے مقدمہ لڑ رہے ہیں۔

(جاری ہے)

سروارنی ایس اے نامی آف شور کمپنی کے ذریعے انہوں نے 50 لاکھ پاﺅنڈ سے زائد ملکیت کے دو فارم ہاﺅسز، میڈین ہیڈ اور بیرک شائر میں خریدے۔

آصف حفیظ کروان کورٹ میں مہنگے فلیٹ کے بھی مالک ہیں جو سینٹرل لندن میں واقع ریجنٹ پارک مسجد کے پاس قائم ہے لیکن یہ مذکورہ فلیٹ آف شور کمپنی کے ذریعے نہیں خریدے گئے۔لاہور سے تعلق رکھنے والے صنعت کار اور داﺅد ہرکیولیز کارپوریشن کے چیئرمین حسین داﺅد بھی بریسٹل گارڈن میں 10 لاکھ پاﺅنڈ سے زائد ملکیت کے آف شور اثاثوں کے مالک ہیں۔

کراچی کی صنعت کار خاتون نوشین ریاض خان بھی آف شور کمپنی توحید انٹرنیشنل لمیٹڈ کے ذریعے برطانوی علاقے سرے میں شیڈویچ پیلس سے متصل چھ رومز پر مشتمل ہاﺅس کی مالکن ہیں جسے انہوں نے دستمبر 2010 میں 11 لاکھ 75 ہزار پاﺅنڈ (18 کروڑ 80 لاکھ روپے) میں خریدا۔منہاس سیکیورٹیز لمیٹڈ نامی آف شور کمپنی کے ذریعے کراچی کے نوید ملک نے ڈیوک سٹریٹ میں فلیٹ حاصل کیا تھا، جس کی 2011 میں 8 لاکھ پاﺅنڈ (12 کروڑ 31 ہزار روپے) کی مالیت تھی۔

کراچی کے عبدالرحمان نے آف شور کمپنی پلاآئیزر لمیٹڈ کے ذریعے یورک روڈ لندن میں اکتوبر 2003 میں 5 لاکھ 69 لاکھ 800 پاﺅنڈ (8 کروڑ 76 لاکھ 81 ہزار روپے) میں خریدی اور 2017 میں پیلس روڈ پر 5 لاکھ 70 ہزار پاﺅنڈ (8 کروڑ 77لاکھ 11 ہزار روپے) میں جائیداد خریدی گئی۔ کراچی کی مہا عابدی دادا بھائی نے بھی جولائی 2009 میں 3 لاکھ 80 ہزار پاﺅنڈ (5کروڑ 84لاکھ روپے) میں آف شور جائیداد ساوتھ ویک سٹریٹ پر فلیٹ کی صورت میں خریدی تھی۔لاہور سے روبینہ حیدر اور ریاض حیدر علی نے دو آف شور اثاثے بنائے جس میں پہلی جائیداد جون 2005 میں 1 لاکھ 28 ہزار پاﺅنڈ (1 کروڑ 96 لاکھ 66 ہزار روپے) میں برٹیش ورجین آئی لینڈ میں خریدی گئی جبکہ دوسری لیورپول روڈ پر حاصل کی گئی۔

متعلقہ عنوان :